شیئر
Views
  • صوبہ Open for Edit

تخمینہ کاری اور  آڈٹ

قانون کے تحت قابلِ ادائیگی ٹیکس کا تخمینہ کرنے کے لئے کون شخص ذمہ دار ہے؟

قانون کے تحت، ہر درج۔شدہ شخص ٹیکس کی مدت کے باعث اپنے ٹیکس کے تخمینہ کے لۓ ذمہ دار ہوں گےا اور اس طرح تشخیص کے بعد اس کو دفعہ 39 کے تحت رٹرن داخل کرنا ضروری ہوگا۔

عارضی (پروویزنل) طور پرایک ٹیکس دہندہ ٹیکس کی ادائگی  کب  کر سکتا ہے؟

چونکہ ایک ٹیکس دہندہ کو اپنے خود تخمینہ کی بنیاد پر ٹیکس کی ادائگی کرنی پڑتی ہے، عارضی طور پر  ٹیکس ادائیگی  درخواست  ٹیکس دہندہ سے موصول ہونا چاہئے جسے اہل افسر کی طرف سےاجازت دی جائے گی۔ دوسرے لفظوں میں کوئی بھی ٹیکس افسر  ترغیب کی عارضی بنیاد پر ٹیکس ادائگی کا حکم نہیں دے سکتا۔ یہ سی جی ایس ٹی / ایس جی ایس ٹی قانون کی دفعہ 60 کے تحت نافذ ہے۔ عارضی طور پر ٹیکس کی ادائگی تبھی کی جاسکتی ہے جب قابل افسر اس کو ایک حکم کے ذریعے اس کی اجازت دے دیتا ہے۔ اس مقصد کے لئے، ٹیکس دہندہ  کو  قابل افسر کو تحریری درخواست دینی ہوگی جس میں وہ عارضی طور پر ٹیکس ادا کرنے کا سبب بتائے‌گا۔ ٹیکس دہندہ  کے ذریعے اس طرح کی درخواست صرف ایسے معاملات میں دی جا سکتی ہے جہاں جہاں وہ مندرجہ ذیل کا تعین کرنے میں قاصرہے:

  1. اس کے ذریعے فراہم کی جانے والی چیزیں یا خدمات کی قیمت، یا
  2. اس کے ذریعےفراہم کی جانے والی چیزیں یا خدمات کے محصول کی شرح۔


اس طرح کے معاملات میں  ٹیکس دہندہ کو ایک مقررہ فارم میں حلف نامہ پر عمل کرنا ہوگا، اور اس طرح کی ضمانت یا حفاظت سمیت جیسا مناسب افسر مناسب سمجھتا ہے۔

وہ آخری وقت میں کیا ہوگا جس میں آخری تخمینہ کیا جانا ضروری ہے؟

آخری تخمینہ کا حکم قابل افسر کے ذریعے عارضی تخمینہ کے حکم کی اطلاع کی تاریخ سے چھے مہینے کے اندر منظور کیا جائے‌گا۔ حالانکہ، معقول وجہ دکھائے جانے پر تو ان کی وجوہات تحریر ی شکل میں درج کی جائے‌گی، مندرجہ بالا چھ ماہ کی مدت مزید بڑھائی جاسکتی ہے: الف) مشترکہ/ ایڈیشنل کمشنر کی طرف سے مزید چھ ماہ قبل آگے  کی مدت سے  زیادہ  نہیں بڑھایاجا سکتا،اور


ب) کمشنر کے ذریعے، اس مدت کے لئے جیسا وہ مناسب سمجھتا ہے، چار مہینے سے زیادہ نہیں۔
لہذا : عارضی تشخیص پانچ سال تک عارضی طور پر ہوسکتا ہے

جہاں آخری تشخیص یا تخمینہ کے مطابق ٹیکس دہندہ کی ذمہ داری عارضی تخمینہ کے مقابلے میں زیادہ ہے، کیا ٹیکس دہندہ سود کی ادائگی کرنے کے لئے ذمہ دار ہوگا؟

ہاں، وہ اصل ٹیکس ادائگی کی تاریخ سے لےکر حقیقی ادائگی کی تاریخ تک سود کی ادائگی کرنے کے لئے ذمہ دار ہوگا۔

اگر سی جی ایس ٹی قانون کی دفعہ61 کے تحت داخل رٹرن میں کسی طرح کی بے ضابطگی پائی جاتی ہے اور اس معاملے سے متعلق کوئی مناسب وضاحت نہیں دی جاتی تب ایسی صورت میں افسر کے ذریعے کیا کاروائی کی جا سکتی ہے؟

اگر ٹیکس دہندہ مطلع کئے جانے کے 30 دنوں کے اندر (متعلق افسر کے ذریعے بڑھائی جانے لائق) اطمینان بخش وضاحت پیش نہیں کرتا یابےضابطگی کو قبول کرنے کے بعد بھی مناسب مدت کے اندر درست کارروائی نہیں کرتا، تب قابل افسر درج ذیل میں سے کسی ایک کا سہارا لے سکتا ہے، (الف) ایکٹ کے دفعہ 65 کے تحت محاسبی/آڈٹ منظم کرنے کے لئے کارروائی کریں گے،
(ب)دفعہ 66 کے تحت ایک مخصوص آڈٹ کے انتظام کی ہدایت دے‌گا جو کہ اس مقصد کے لئے کمشنر کے ذریعے منتخب چارٹرڈ ایکاؤنٹیڈ یا محاسب کے ذریعے کیا جائے‌گا،یا
(ج)قانون کی دفعہ 67 کے تحت جائزہ،تلاشی اور ضبطی کے عمل شروع کرے‌گا،یا
(د)قانون کی دفعہ 73 یا 74 کے تحت ٹیکس اور دیگر بقائے کی تصدیق کے لئے کاروائی کو آگے بڑھائے‌گا۔

اگر ایک ٹیکس دہندہ قانون (دفعہ 39 کے تحت ماہانہ / سہ ماہی) یا 45 (آخری رٹرن) کے مطابق ضروری رٹرن داخل کرنے میں نا کام ہوتا ہے، تو ٹیکس افسر کے پاس کیا تدبیر ہے؟

اہل افسرکو پہلے سی جی ایس ٹی / ایس جی ایس ٹی قانون کی دفعہ 46کے تحت ڈیفالٹرٹیکس دہندہ کو نوٹس جاری کرنا ہوگا، جس میں اس کو 15 دنوں کی مدت کے اندر رٹرن داخل کر نے کی ضرورت ہوگی۔ اگر ٹیکس دہندہ متعینہ وقت کے اندر رٹرن فائل کرنے میں نا کام رہتا ہے، تو اہل افسر رٹرن ڈیفالٹر کے ٹیکس ذمہ داری کا جائزہ اس کے بہترین فیصلہ کے ساتھ کرنےکے لئے آگے بڑھیں‌گے، جو اس کے ساتھ دستیاب تمام متعلقہ دستاویزات پر غور کریں گے(دفعہ 62)

کس صورتحال میں دفعہ 60 کے تحت جاری کئے گئے بہترین فیصلہ تشخیصی حکم واپس لئے جا سکتے ہیں؟

سی جی ایس ٹی / ایس جی ایس ٹی قانون کی دفعہ 62 کے تحت اہل افسر کے ذریعے منظور کئے جانے والے بہترین فیصلے کا حکم، خود بخود واپس مانا جائے‌گا اگر ٹیکس دہندہ ڈیفالٹ مدت کےلئے بہترین فیصلہ جاری حاصل ہونے کے تیس دن کے اندر صحیح رٹرن دائر کرتا ہے (یعنی رٹرن فائل کرتا ہے اور اسکے اس کے ذریعے قیاسی ٹیکس جمع کرتا ہے)۔

دفعہ 62 (بہترین فیصلہ) اور دفعہ 63 (نان فائلر) کے تحت تخمینہ کاری حکم جاری کرنے کے وقت کی حد کیا؟

دفعہ 62 یا دفعہ 63 کے تحت ایک تخمینہ کاری حکم منظورکرنے کا وقت سالانہ رٹرن پیش کرنے کی متعینہ تاریخ سے پانچ سال ہے۔

ایک ایسےفرد سے متعلق قانونی بنیاد کیا ہے جو  ٹیکس ادا کرنے کے قابل ہے، لیکن رجسٹریشن حاصل کرنے میں ناکام ہے؟

سی جی ایس ٹی / ایس جی ایس ٹی قانون کی دفعہ 63 میں یہ انتظام ہے کہ ایسے معاملے میں اہل افسر ٹیکس کی ذمہ داری کا تعین کر سکتے ہے اور متعلقہ ٹیکس کی مدت کے لئے بہترین فیصلہ کر سکتے ہیں۔  حالانکہ،مالی سال کے لئے سالانہ رٹرن پیش کرنے کی تاریخ سے پانچ سال کی مدت کے اندر، اس طرح کا حکم منظور کیا جاسکتا ہے، جس میں محصول کی ادائگی نہ کریں۔

کن حالات میں ٹیکس آفیسر خلاصہ تخمینہ کاآغاز کر سکتے ہیں؟

سی جی ایس ٹی / ایس جی ایس ٹی قانون کی دفعہ 64 کے مطابق، خلاصہ تخمینہ آمدنی حقوق کے تحفظ کے لئے تب شروع کیا جا سکتا ہے جب :
الف) اہل افسر کے پاس کافی ثبوت موجود ہیں کہ ٹیکس دہندہ نے قانون کے تحت ٹیکس ادا کرنے کی ذمہ داری قبول کی ہے، اور
ب) اہل افسر کا یقین ہے کہ تشخیص کے حکم کو  تاخیر سےمنظور کرنے میں آمدنی کے مفاد پر منفی اثر پڑے گا.
اس طرح کے اضافی احکامات / جوائنٹ کمشنر سے اجازت حاصل کرنے کے بعد، یہ منظور کیا جا سکتا ہے۔

اپیلی اقدامات کے علاوہ، کیا خلاصہ تشخیص کے مطابق ٹیکس دہندہ کے لئے کسی بھی دوسری تشخیص دستیاب ہے؟

ایک محصول دہندہ فرد جس کے خلاف خلاصہ تخمینہ حکم منظور کیا گیا ہے، حکم موصول ہونے کی تاریخ سے تیس دنوں کے اندر حقوق شعبہ کے ایڈیشنل/ جوائنٹ کمشنر سے اس کی واپسی کی درخواست کر سکتا ہے۔ اگر مذکورہ افسر کو حکم غلط لگتا ہے، تو وہ اس سے واپس لے سکتا ہے اور اہل افسر کو سی جی ایس ٹی / ایس جی ایس ٹی قانون کی دفعہ 73 یا 74 کے تحت ٹیکس ذمہ داری کے تعین کے لئے حکم دے سکتا ہے۔ اگر ایڈیشنل/ جوائنٹ کمشنر غلط خلاصہ تشخیص حکم (سی جی ایس ٹی / ایس جی ایس ٹی قانون کی دفعہ 64) پاتا ہے، تو اپنے  مطابق اسی طرح کی کارروائی کر سکتے ہیں

کیا محصول دہندہ فرد کے خلاف خلاصہ تشخیص حکم ضروری ہے؟

نہی، کچھ معاملات میں، جب مال نقل و حمل کے تحت ہوتا ہے یا گودام میں جمع ہوتا ہے، اور ایسے سامانوں سے متعلق محصول دہندہ کا پتا نہیں لگایا جا سکتا ہے، ایسے سامانوں کے انچارج کو محصول دہندہ مانا جائے‌گا اور اس کا تخمینہ (سی جی ایس ٹی / ایس جی ایس ٹی قانون کی دفعہ64 کے لئے مہیا) کیا جائے‌گا۔

ٹیکس دہندگان کو آڈٹ کون کرسکتے ہیں؟

    جی ایس ٹی ایکٹ کے تحت آڈٹ مندرجہ ذیل تین طرح سےکیا جا سکتا ہے.
  1. (چارٹرڈ اکاؤنٹنٹ یا کوسٹ اکاؤنٹینٹ : کے ذریعے آڈٹ ہر درج۔شدہ شخص کا اکاؤنٹ جس کا کاروبار مقررہ حد سے زیادہ ہے،چاٹرڈ اکاؤنٹینٹ یا خرچ محاسب کے ذریعے  آڈٹ کے دائرےمیں لایا جا سکتاہے۔ (سی جی ایس ٹی / ایس جی ایس ٹی قانون کی دفعہ 35 (5)
  2. (ب)محکمے کی طرف سے آڈٹ: کمشنر یا عمومی یا خصوصی آرڈر کے ذریعے ان کی طرف سے اختیارشدہ C G S T یا ایس جی ایس ٹی/U T G S T کے کسی بھی افسر کسی بھی درج۔شدہ شخص کے آڈٹ کو مسلسل کر سکتے ہیں۔ آڈٹ کے تسلسل اور طریقہ ایک مقررہ دور میں طے کی جائے گی. (سی جی ایس ٹی / ایس جی ایس ٹی قانون کی دفعہ 65)
  3. (خصوصی آڈٹ : اگر،چھان بین،جانچ،تفتیش یا دیگر کاروائی کے کسی بھی سطح پر،اگر محکمہ کا ماننا ہے کہ قیمت کاصحیح طریقےسے اعلان نہیں کیا گیا ہے یامنافع حاصل کیاگیا کریڈٹ عام حدود میں نہیں ہے تو محکمہ خصوصی آڈٹ کا حکم دے سکتا ہے جو کہ چارٹرڈ محاسب یا اخراجات محاسب جن کو محکمہ کے ذریعے نامزد کیا گیا ہے،کےذریعہ کی جائےگی (سی جی ایس ٹی / ایس جی ایس ٹی قانون کی دفعہ 66)

کیا آڈٹ شروع کرنےسے قبل کسی بھی سابقہ معلومات کی ضرورت ہے؟

ہاں، سابقہ معلومات ضروری ہے اور محصول دہندہ کو آڈٹ شروع کرنے سے کم سے کم 15 دن پہلے مطلع کیا جانا چاہئیے۔

کتنی مدت کے اندرآڈٹ پورا کیا جاتا ہے؟

آڈٹ شروع ہونے کی تاریخ سے 3 مہینے یا کمشنر کی منظوری کے مطابق زیادہ سے زیادہ6 مہینے کی مدت کے اندر پورا کیا جانا ضروری ہے۔

آڈٹ شروع کرنے کا کیا مطلب ہے؟

لفظ 'آڈٹ کی شروعات اہمیت کی حامل ہے کیونکہ آڈٹ کی ابتدا ہونے کی تاریخ کے حوالہ سے ایک متعین محدود وقت کے اندر پورا کیاجانا ہے۔ آڈٹ کا آغازکا معنی آگے مندرجہ ذیل میں سے ایک ہے:
الف) جس تاریخ کوآڈٹ افسروں کے ذریعے رکارڈ / کھاتوں کے آڈٹ کے لئے مانگ کرنے پر ان کو دستیاب کرایا جاتا ہے، یا
ب) محصول دہندہ کے تجارتی مقام آڈٹ کا اصل آغاز / قیام۔

جب ایک محصول دہندہ آڈٹ کا نوٹس حاصل کرتا ہے تب اس کی کیا ذمہ داری ہو تی ہے؟

محصول دہندہ فرد کے لئے مندرجہ ذیل باتیں ضروری ہیں :
الف) دستیاب کھاتوں / رکاڈوں یا افسر کے ذریعے مانگے گئے کھاتے / رکاڈوں کی تصدیق کی سہولیات فراہم کرنا.۔
ب) آڈٹ کے جاری عمل کے لئےلازمی طور پر ایسی معلومات فراہم کرنا، اور
ج) وقت پر آڈٹ پورا کرنے کے لئے معاونت کرنا۔

آڈٹ کے اختتام پر اہل افسر کی طرف سے کیا کارروائی کی جائے گی؟

اہل افسر  زیادہ سے زیادہ تیس دنوں کے اندرآڈٹ کے نتیجہ سے متعلق اپنے نتائج، نتائج کے اسباب اور محصول دہندہ کے حقوق اور ذمہ داری کے بارے میں مطلع کریں‌گے۔

کن حالات کے تحت ایک خصوصی آڈٹ قائم کیا جا سکتا ہے؟

کچھ محدود حالات  میں ہی خصوصی آڈٹ قائم کیا جا سکتا ہے جہاں چھان بین، تفتیش، وغیرہ کے دوران، یہ پتا چلتا ہے کہ معاملہ پیچیدہ ہے یا آمدنی کا خطرہ / حصہ بہت زیادہ ہے۔ یہ طاقت سی جی ایس ٹی / ایس جی ایس ٹی قانون کی دفعہ66 میں دی گئی ہے۔

خصوصی آڈٹ کے لئے کون نوٹس دے سکتا ہے؟

خصوصی آڈٹ کے لئے  معاون/ ڈپٹی کمشنرصرف کمشنر کی سابقہ منظوری کے بعد صرف نوٹس دے سکتا ہے.

خصوصی آڈٹ کون کرے‌گا؟

کمشنر کی طرف سے نامزد چارٹرڈ اکاؤنٹنٹ یا کوسٹ اکاؤنٹنٹ آڈیٹنگ شروع کر سکتا ہے.

آڈٹ رپورٹ جمع کرنے کے لئے وقت کی حد کیا ہے؟

آڈیٹر کو 90 دنوں کے اندر یا 90 دنوں کے لئے آگے توسیع کی مدت کے اندر اندر رپورٹ پیش کرنی ہوگی۔

خصوصی آڈٹ کی لاگت کون برداشت کرے گا؟

آڈیٹرکو واجب الادا معاوضہ سمیت جائزہ اور آڈٹ کے خرچ کو کمشنر کے ذریعے مقرر کیا جائے گا اور مہیا کرایا جائے گا۔

خصوصی آڈٹ کے بعدٹیکس حکام کی طرف سے کیا کارروائی کی جا سکتی ہے؟

نتائج/ خصوصی آڈٹ کے مشاہدوں کے مطابق، سی جی ایس ٹی / ایس جی ایس ٹی قانون کی دفعہ73 یا 74 کے تحت کاروائی شروع کی جا سکتی ہے۔

ماخذ : حکومت ہند کا مرکزی مصنوعات و کسٹمز  ڈیوٹی بورڈ، محکمہ آمدنی، وزرات خزانہ

 

3.09090909091
اپنی تجاویز ارسال کریں (اگر مذکورہ بالا مواد پر آپ کو کوئی تبصرہ/تجویز دینی ہو تو براہ کرم یہاں درج کریں))
Enter the word
Related Languages
نویگتیوں
Back to top