ہوم / سماجی بہبود / شہری غریبی تخفیف / پردھان منتری آواس یوجنا۔سب کے لئے آواس ( شہری )
شیئر
Views
  • صوبہ Open for Edit

پردھان منتری آواس یوجنا۔سب کے لئے آواس ( شہری )

اِس حصے میں پردھان منتری آواس یوجنا۔سب کے لئے آواس ( شہری ) کے بارے میں معلومات دی گئی ہے ۔

ہندوستان کے عزّت ماب صدر جمہوریہ نے تاریخ 9 جون،2014 کو پارلیمنٹ کے مشترکہ سیشن کی اپنی تقریر میں یہ اعلان کیا تھا کہ " ملک کی آزادی کے 75 سال پُورے ہونے تَک ہرایک پرِوار کے پاس آب کنیکشن،بیت الخلا سہولیات،24x7 بجلی کی فراہمی اَور سہولیات کے ساتھ پکّی رہائش گاہ ہوگی۔"  محترم وزیر اعظم نے ملک کی آزادی کے 75 سال مُکَمَّل ہو جانے پر سال 2022 تک سبھی کے لِئے آواس کی قیاس آرائی کی ہے۔اِس مقصد کو حاصل کرنے کے لئے مرکزی حکومت نے ایک وسیع مِشن " 2022 تَک سب کے لئے آواس" شروع کیا ہے۔

دستیاب امداد

مِشن کو 2015۔2022 کے دوران لاگو کیا جائے‌گا اَور درج ذیل کاموں کے لئے شہری مقامی اداروں اَور دیگر عمل درآمد ایجنسیوں کو ریاستوں /یونین ٹیریٹریز کے ذریعے مرکزی مدد دستیاب کرائی جایےگی:

  • ذاتی شراکت داری کے ذریعے وسائل کے طور پر زمین کا استعمال کرکے موجودہ جُھگی باشندوں کی اصل۔جگہ پر بازآباد کاری
  • قرض سے متعلق امداد
  • شراکت داری میں کِفایتی رہائش گاہ
  • مُسْتَفِید کی رہنمائی والی رہائش گاہ کی تعمیر / توسیع کے لئے امداد

قرض سے متعلق امداد جزو کی تکمیل ایک مرکزی اسکیم کے طور پر کی جائے‌گی جبکہ دیگر تین جزو مرکزی اسپانسرڈ اسکیم ( سی ایس ایس ) کے طور پر لاگو کئے جائیں‌گے ۔ یوجنا کو تین مراحل میں ، 500 زمرہ۔ 1 شہروں پر شروعاتی فوکس کے ساتھ 4041 قانونی قصبوں پر مشتمل مکمل شہری علاقہ کو شامل کیا جائے‌گا ۔ اسکیم کے قرض سے متعلق امداد جزو کو شروعات سے ہی ملک بھر میں تمام قانونی قصبوں میں لاگو کیا جائے‌گا ۔

میدان عمل

  1. سال 2015-2022 کے دوران شہری علاقے کے لئے "سب کے لئے آواس" مِشن کو لاگو کیا جائے گا اور یہ مِشن سال 2022 تک تمام اہل خاندانوں /مستفیدین کو رہائش گاہ فراہم کرنے کے لئے ریاستوں اور یونین ٹیریٹریز  کے ذریعے سے عمل درآمد ایجنسیوں کو مرکزی مدد فراہم کرے گا۔
  2. مِشن کو قرض سے منسلک امداد کے جزو کو چھوڑ کر مرکزی اسپانسرڈ اسکیم (سی ایس ایس) کے طور پر لاگو کیا جائے گا جس کو ایک مرکزی علاقہ اسکیم کے طور پر لاگو کیا جائے گا۔
  3. ایک مستفید خاندان میں شوہر،بیوی،غیر شادی شدہ بیٹا اور / یا غیر شادی شدہ لڑکیاں شامل ہوں گے۔جس مستفید پرِوار کا ہندوستان کے کسی حصہ میں اپنے نام پر یا اس کے پرِوار کے کسی بھی رکن کے نام پر اپنا گھر نہیں ہونا چاہئے۔وہی پرِوار اس مِشن کے تحت مرکزی امداد حاصل کرنے کا اہل ہوگا۔
  4. ریاست/ یونین ٹیریٹریز اپنی صوابدید پر آخری تاریخ مقرر کر سکتے ہیں جس سے مستفیدین کو اسکیم کے تحت فائدہ اٹھانے کے لئے اہلیت کے لئے اس شہری علاقے کا رہائشی ہونا ضروری ہوگا۔
  5. یہ مِشن اپنے تمام اجزاء کے ساتھ تاریخ 17.06.2015 سے لاگو ہو گیا ہے اور اِس کو 31.03.2022 تک لاگو کیا جائے گا۔

کوریج اَور میعاد

500 زمرہ -I شہروں پر توجہ مرکوز کرنے کے ساتھ مردم شماری 2011 کے مطابق تمام 4041 شُماریات قانونی قصبوں کو تین مراحل میں کَوَر کیا جائے گا جن کی تفصیل اس طرح ہے:

  • مرحلہ۔I ( اپریل،2015 – مارچ،2017 ) – ریاستوں/یونین ٹیریٹریز علاقوں سے اُن کی دلی خواہش کے مُطابق 100 شہروں کو کَوَر کرنے کے لئے۔
  • مرحلہ۔II ( اپریل،2017 – مارچ،2019 ) اضافی 200 شہروں کو کَوَر کرنے کے لئے۔
  • مرحلہ۔III ( اپریل،2019 – مارچ،2022 ) – سبھی دیگر باقی شہروں کو کَوَر کرنے کے لئے۔

تکمیل کی طریقیات

اِس مِشن کو مستفیدین،شہری مقامی اداروں اَور ریاستی حکومتوں کو اختیار دیتے ہوئے چار اختیارات کے ذریعے سے لاگو کیا جائے‌گا۔یہ چار اختیار اس طرح ہیں :

زمین کا وسائل کے طور پر استعمال کرکے " سوا۔استھانے " سلَم باز ترقی اہل سلَم باشندوں کو رہائش گاہ فراہم کرنے کے لئے ذاتی شراکت داری سے وسائل کے طور پر زمین کا استعمال کرتے ہوئے " سوا۔استھانے " سلَم بازآبادی " سبھی کے لِئے آواس " مِشن کا ایک اہم جزو ہے۔اِس نقطہ نظر کا مقصد اہل سلَم باشندوں کو باضابطہ شہری نظم و نسق میں لاتے ہوئے اُن کو رہائش گاہ فراہم کرنے کے لئے سلَموں کے تحت زمین کی لاکڈ صلاحیت کو بڑھانا ہے۔

قرض پر منحصر بیاج سبسِڈی یوجنا

مِشن میں شہری غریبوں کی رہائش گاہ کی ضروریات کے لئے ادارہ جاتی قرض روانی کو بڑھانے کے لئے ڈیمانڈ سائڈ سسٹم کے طور پر قرض پر منحصر بیاج سبسِڈی جزو کی تکمیل کی جائے‌گی۔اہل شہری غریبوں ( ای ڈبلیو ایس/ایل آئی جی ) کے ذریعے حصول،رہائش گاہ کی تعمیر کے لئے، لئے گئے ہوم لون پر قرض پر مبنی سبسِڈی دی جائے‌گی۔اقتصادی طور پر کمزور طبقات ( ای ڈبلیو ایس ) اَور کم آمدنی طبقہ ( ایل آئی جی ) کے مُسْتَفِید جو بینکوں،رہائش گاہ مالیاتی کمپنیوں اَور دیگر ایسے اداروں  سے ہوم لون کی مانگ‌کر رہے ہیں،وہ 6.5 % کی شرح پر 15 سالوں کی مدت کے لئے یا قرض کی مدت کے دوران،اِس میں سے جو کم ہو،کے لئے بیاج سبسِڈی کے لئے اہل ہوں‌گے۔بیاج سبسِڈی کی خالص مَوجُودَہ قیمت ( این پی بی ) کی 9 % کی چھُوٹ شرح پر گنتی کی جائے‌گی۔قرض پر منحصر سبسِڈی صرف 6 لاکھ روپئے  تَک کے قرض کی رقم  کے لئے میسّر ہوگی اَور 6 لاکھ روپئے سے زیادہ کا قرض غیر امداد یافتہ شرح پر ہوگا

شراکت داری میں کفایتی رہائش گاہ ( اے ایچ پی )

شراکت داری میں کفایتی آواس مِشن کا تِیسرا جزو ہے۔یہ ایک سپلائی بیسڈ سسٹم ہے۔یہ مِشن ریاستوں / یونین ٹیریٹریز  / شہروں کے ذریعے مختلف شراکت داری سے بنائے جا رہے اقتصادی طور پر کمزور طبقہ ( ای ڈبلیو ایس ) کی رہائش گاہوں کو مالی امداد فراہم کرے‌گا۔کفایتی شرح پر ای ڈبلیو ایس زمرے کے لئے رہائش گاہوں کی دستیابی بڑھانے کے لئے ریاست / یونین ٹیریٹریز،اپنی ایجنسی یا صنعتوں سَمیت ذاتی علاقے کو ساتھ شراکت داری کے ذریعے سے،کفایتی رہائش گاہ منصوبوں کی منصوبہ بندی تیار کر سکتے ہیں۔ایسے منصوبوں میں 1.5 لاکھ روپئے کی شرح سے مرکزی امداد تمام اِی ڈبلیو ایس رہائش گاہوں کے لئے دستیاب ہوگی۔

مُسْتَفِید پر منحصر ذاتی رہائش گاہ کی تعمیر یا توسیع

اِس مِشن کا چَوتھا جزو مِشن کے دیگر اجزاء کا فائدہ لینے میں نااہل مستفیدین کو شامل کر خود اُن کے ذریعے نئی رہائش گاہوں کی تعمیر یا موجودہ رہائش گاہ کی اصلاح کے لئے اقتصادی طور پر کمزور طبقے  سے متعلق ذاتی اہل خاندانوں کو امداد دیتا ہے۔اِس مِشن کے تحت ایسے پرِوار نئی رہائش گاہوں کی تعمیر کے لئے 1.5 لاکھ روپئےکی مرکزی امداد حاصل کر سکتے ہیں۔ایسے مستفیدین ایچ ایف اے پی او اے کا حصہ ہونے چاہئے۔ زیادہ معلومات کے لئے کلِک کریں-

ماخذ : وزرات رہائش گاہ اَور شہری غریبی تخفیف  ، حکومت ہند ۔

متعلقہ وسائل

1. پردھان منتری آواس یوجنا پر اکثر پوچھے جانے والے سوال

2.5
اپنی تجاویز ارسال کریں (اگر مذکورہ بالا مواد پر آپ کو کوئی تبصرہ/تجویز دینی ہو تو براہ کرم یہاں درج کریں))
Enter the word
Back to top