ہوم / سماجی بہبود / سماجی بیداری / بال بیاہ - ایک تعارف
شیئر
Views
  • صوبہ Open for Edit

بال بیاہ - ایک تعارف

یہ حصہ ہندوستان میں ریاست کے مطابق بال بیاہ سے متعلق نمبر رکھتے ہوئے اس کی وجہ ، بُرے اثرات اَور اُس کے بیخ کنی کے لئے کئے جا رہے کوششوں کی معلومات دیتا ہے ۔

بال بیاہ ایک تعارف


یہ حصہ ہندوستان میں ریاست کے مطابق بال بیاہ سے متعلق نمبر رکھتے ہوئے اس کی وجہ ، بُرے اثرات اَور اُس کے بیخ کنی کے لئے کئے جا رہے کوششوں کی معلومات دیتا ہے ۔


بال بیاہ کا تعلق عام طور پر ہندوستان کے کچھ سماجوں میں مشہور سماجی  عملوں  سے جوڑا جاتا ہے ، جِس میں ایک جوان لڑکی ( عام طور پر 15 سال سے کم عمر کی لڑکی ) کی شادی ایک بالِغ مرد سے کی جاتی ہے ۔ بال بیاہ کی دُوسری قسم کی روایت میں دو بچّوں ( لڑکا اَور لڑکی ) کے ماں باپ مستقبل میں ہونے والی شادی طئے کرتی ہیں ۔ اِس روایت میں دونوں شخص ( لڑکا اَور لڑکی ) اُن کی شادی قابل عمر ہونے تَک نہیں مِلتے ، جبکہ اُن کی شادی ختم کرائی جاتی ہے ۔ قانون کے مُطابق ،قابل شادی عمر مردوں کے لئے 21 سال اَور خواتین کے لئے 18 سال ہے ۔
اَگر کِسی کا کوئی بھی دوست اِس سے کم عمر میں شادی کرتا ہے ، تو وہ شادی کو ناقابل قبول / منسوخ اعلان کروا سکتا / سکتی ہے ۔

بال بیاہ: حقائق اَور اعدادوشمار


مختلف ریاستوں میں اٹھارہ سال سے کم عمر میں شادی شدہ  لڑکیوں کی  فیصدی خطرناک ہے -

  • مَدھیہ پرَدیش 73 فیصدی
  • راجَستھان 68 فیصدی
  • اُتّر پرَدیش 64 فیصدی
  • آندھر پردیش 71 فیصدی
  • بِہار 67 فیصدی


یونیسیف کی " دنیا کے بچّوں کی صورت حال 2009 " رپورٹ کے مُطابق 20 24 سال عمر طبقے کی ہندوستان کی 47 فیصدی خواتین قانونی طور پر مقبول عمر کی  حد 18 سال سے کم عمر میں بَیاہِی گئیں ، جِس میں 56 فیصدی دیہی علاقوں سے تھیں ۔ یونیسیف کے مُطابق ( ' دنیا کے بچّوں کی صورت حال 2009 ' ) دنیا کے بال بیاہوں میں سے 40 فیصدی ہندوستان میں ہوتے ہیں ۔

 

بال بیاہ‌کے بُرے اثرات


جو لڑکیاں کم عمر میں شادی شدہ ہو جاتی ہیں اُن کو اکثر کم عمر میں سیکس کی شروعات اَور حمل ٹہرنے  سے منسلک صحت مسائل ہونے کی مضبوط امکان ہوتی ہے ، جِن میں ایچ۔ آئی۔ وی اَور آبسٹیٹرِک فِسچُلا شامل ہیں ۔

  • کم عمر کی لڑکیاں ، جِن کے پاس رتبہ ، طاقت اَور پختگی نہیں ہوتے ، اکثر گھریلو تشدد ، سیکس سے متعلق زیادتیوں اَور سماجی اخراج کا شکار ہوتی ہیں ۔
  • کم عمر میں شادی تقریباً ہمیشہ لڑکیوں کو تعلیم یا معنی خیز کاموں سے محروم کرتا ہے جو اُن کی مسلسل غریبی کا سبب بنتا ہے ۔
  • بال بیاہ جنسی تفریق ، بیماری اَور غریبی کے بَھنورجال میں پھنسا دیتا ہے ۔


جب وہ جسمانی طور پر بالغ  نہ ہوں ، اُس حالت میں کم عمر میں لڑکیوں کی  شادی کرانے سے مادریت متعلقہ اَور شیر خوار کی موت کی شرحیں زیادہ تر ہوتی ہیں ۔

 

بال بیاہ کی وجہ سے

  • غریبی
  • لڑکیوں کی تعلیم کا نِچلی سطح
  • لڑکیوں کو کم رتبہ دیا جانا اَور اُن کو مالی بوجھ سمجھنا
  • سماجی  رواجات اَور روایات

بال بیاہ: بیخ کنی کے لئے سرکار اَور غیر سرکاری اداروں کی پہل

  • بال بیاہ‌کے خلاف قوانین کی  تعمیر
  • لڑکیوں کی تعلیم کو آسان بنانا
  • نقصان دہ سماجی اصولوں کو بدلنا
  • کمیونٹی پروگراموں کو مدد
  • غیر ملکی امداد زیادہ سے زیادہ کرنا
  • نوجوان خواتین کو مالیاتی موقع فراہم کرنا
  • بال ودھُؤوں کی باریک ضروریات کو پُورا کرنا
  • پروگراموں کی تشخیص کر دیکھنا کہ کیا بات اثردار ہوگی

سرکار کی پہل

  • بال بیاہ انسداد قانون
  • بال بیاہ روایت روکنے کی کوشش میں راجَستھان ، گُجرات ، مَہاراشٹر ، کَرناٹَک اَور ہِماچل پرَدیش ریاستوں نے قانون پاس کئے ہیں جو ہرایک شادی کو قانونی ماننے کے لئے اُس کی نامزدگی ضروری بناتے ہیں ۔


بچوں کے لئے قومی کام کی منصوبہ بندی 2005 "کے مطابق (ہندوستان کی خواتین اور بچّوں کی ترقی کے محکمہ کی طرف سے شائع) 2010 تک بچوں کی شادی کو مکمل طور پر ختم کرنے کا ہدف مقرر کیا گیا ہے.

2.16666666667
اپنی تجاویز ارسال کریں (اگر مذکورہ بالا مواد پر آپ کو کوئی تبصرہ/تجویز دینی ہو تو براہ کرم یہاں درج کریں))
Enter the word
Related Languages
Back to top