شیئر

نئی منزل اسکیم

اِس صفحے میں اقلیتی طبقات کے لئے ایک متحد تعلیم اَور کاروبار پہل نئی منزل اسکیم کی معلومات دی گئی ہے۔

اسکیم کا مقصد

نئی منزل کا مقصد غریب اقلیتی جوان کو تخلیقی طور پر منصوبہ بند کرنا اَور اُن کو دوامی اَور فائدہ مند روزگار کے موقع حاصل کرنے میں مدد کرنا ہے جِس سے کہ وہ مرکزی دھارا کی مالی سرگرمیوں کے ساتھ جُڑ سکے۔ اَگلے 5 سالوں میں منصوبہ کے خاص مقصد درج ذیل ہیں-

  1. اقلیتی طبقات کے اُن نوجوانوں، جو اسکول ڈراپ آؤٹس ہیں، کو جُٹانا اَور اُن کو قَومی آزاد اسکول ادارہ (این آئی او ایس) یا دیگر ریاستی آزاد اسکول نظام کے ذریعے کلاس 8 یا 10 تَک کی رسمی تعلیم میسّر کرانا اَور سند یافتہ کرنا ہے۔
  2. پروگرام کے حصہ کی شکل میں، نوجوانوں کو بازار متاثر فُنون میں متحد استعدادی تربیت میسّر کرانا۔
  3. کم سے کم 70 % تربیت یافتہ نوجوانوں کو نَوکری میں پلیسمینٹ میسّر کرانا جِس سے کہ وہ بنیادی کم سے کم مزدوری حاصل کر سکیں  اَور اُن کو دیگر سماجی تحفظ حق دارِیاں جیسے کہ محتاط فنڈز، اہلکار ریاستی بیمہ (ای ایس آئی) وغیرہ مہیّا کرانا۔
  4. صحت اَور زندگی استعداد کے متعلق بیداری بڑھانا اَور حسّاس کاری کرنا۔

اہلیت کے معیار

زیرتربیت / مُسْتفید

  1. پروگرام ملک کے تمام علاقوں میں منعقد  کیا جائے‌گا۔پروگرام کے تحت لگ بھگ 100،000 اقلیتی امیدوار کی تربیت کا کُل حقیقی ہدف 5 سالوں کی تکمیل مدت میں پُورا کیا جائے‌گا۔ امید کی جاتی ہے کہ ہدف کا لگ بھگ 2 %  پہلے سال میں جلد کیا جائے‌گا اَور بقایا آنے والے سالوں میں تقسیم کیا جائے‌گا۔
  2. زیرتربیت قَومی اقلیت کمیشن قانون،1992 کے تحت مثلاً مشتہرہ اقلیتی طبقہ (یعنی مسلم،عیسائی،سکھ،بدھ،جین اَور پارسی)سے وابستہ ہونا چاہئے۔
  3. اُن ریاستوں / یونین ریاستی علاقوں میں، جہاں وابستہ ریاست / یونین ریاستی علاقے کی حکومتوں کے ذریعے مشتہرہ دیگر اقلیتی طَبْقات موجود ہیں تو اُن کو بھی پروگرام کے لئے اہل سمجھا جا سکتا ہے لیکِن اُن کو کُل سیٹوں کے 5 % سے زیادہ نہیں مِلے‌گا۔
  4. زیرتربیت کی عمر 17-35 سال کے درمیان ہونی چاہئے۔
  5. غیر اقلیتی ضِلْعے یا شہر کے اندر اقلیتی آبادی کی کثرت والے کچھ خاص پاکیٹس بھی خیال کئے جانے کے اہل ہوں‌گے۔
  6. دیہاتی اَور شہری علاقوں دونوں سے زیرتربیت غریبی لکیر سے نیچے (بی پی ایل) کے ہونے چاہئے۔
  7. زیرتربیت کی کم سے کم قابلیت این آئی او ایس / نیچے واضع شدہ مساوی کے مُطابق ہونی چاہئے-

کلاس ۸ کے سبب برج پروگرام

امیدوار کے پاس کلاس ۵ کامیاب یا ناکامیاب کا یا مساوی تعلیم کا اسکول چھوڑنے کی سند ہونا چاہئے یا اُس کو اِس نصاب کو جاری رکھنے کی اپنی صلاحیت کا ذکر کرتے ہوئے ذاتی تصدیق میسّر کرانا ہوگا۔امیدوار نصاب کو جاری رکھنے کے لئے این آئی او ایس یا مساوی بورڈ کے ذریعے اس حد تک مقررہ کم سے کم عمر کو پُورا کرتا ہو۔

کلاس ۱۰ کے سبب برج پروگرام

امیدوار کے پاس کلاس ۸ کامیاب یا ناکامیاب کا یا مساوی تعلیم کا اسکول چھوڑنے کی سند ہونا چاہئیے یا اُس کو اِس نصاب کو جاری رکھنے کی اپنی صلاحیت کا ذکر کرتے ہوئے ذاتی تصدیق میسّر کرانا ہوگا۔امیدوار نصاب کو جاری رکھنے کے لئے این آئی او ایس یا مساوی بورڈ کے ذریعے اس حد تک مقررہ کم سے کم عمر کو پُورا کرتا ہو۔

  1. اسکیم کے تحت 30 % مُسْتَفید سیٹیں لڑکی / خاتون امیدوار کے لئے مقررہ کی جائیں‌گی اَور 5 % مُسْتَفید سیٹیں اقلیتی طبقے سے متعلق معذور افراد کے لئے مقررہ کی جائیں‌گی۔مُختلف طَبْقات کی یکجہتی کو  پرجوش کرنے کے لئے غیر اقلیتی طبقات کے بی پی ایل پریواروں سے وابستہ 15 % امیدواروں پر بھی غور کیا جائے‌گا۔
  2. اَگر اِس اسکیم کے تحت اس حد تک مقررہ محفوظ زمرے خالی رہتے ہیں،تو اِن خالی سیٹوں کو غیر محفوظ سمجھا جائے‌گا۔

ماخذ : اقلیتی کام شعبہ وزرات،حکومتِ حند۔

2.88888888889
اپنی تجاویز ارسال کریں (اگر مذکورہ بالا مواد پر آپ کو کوئی تبصرہ/تجویز دینی ہو تو براہ کرم یہاں درج کریں))
Enter the word
Back to top