ہوم / سماجی بہبود / اقلیتی فلاح و بہبود / تعلیمی عطاۓ اختیار / یونین عوامی خدمات کمیشن امتحان کے لئے امداد اسکیم
شیئر
Views
  • صوبہ Open for Edit

یونین عوامی خدمات کمیشن امتحان کے لئے امداد اسکیم

کردار

یونین عوامی خدمات کمیشن، اہلکار انتخابی کمیشن، ریاستی عوامی خدمات کمیشن وغیرہ کے ذریعے منعقد شروعاتی امتحان کو کامیاب کرنے والے اقلیتی طالب علموں کے لئے مدد کی اسکیم مہیّا کرائی جاتی ہے۔

اسکیم کا پس منظر اَور جواز

قَومی مذہبی اَور نسلی زبان اقلیت کمیشن نے اپنی رپورٹ میں دِکھایا ہے کہ تمام طبقات اَور گروہوں کو مالی مواقع اَور روزگار میں برابر کی حصےداری مِلنی چاہئے۔ اِس میں اُن طبقات کے لئے انتہائی سرگرم اقدامات کی قیاس آرائی کی گئی ہے، جو پیچھے رہ گئے ہیں اَور ضرورت سے زیادہ حاشیے پر آ گئے ہیں۔ اس لئے، اِن طبقات کی مدد کرنے کے لئے سرکاری پروگراموں کی شکل میں سرگرمیوں کی ضرورت ہے، جِن میں

  1. خود روزگار اَور مزدوری روزگار اَور
  2. ریاست اَور مرکزی خدمتوں میں بھرتی کے تعلق میں مقاصد کا استقلال کیا گیا ہو۔

11وِیں پنج سالہ اسکیم کی مدت کے دوران اقلیتی طبقات کے امیدوار کے لئے سرکاری اَور ذاتی اداروں میں مسابقتی امتحان کے لئے امتحان سے پہلے کوچنگ مہیّا کرانے کے لئے ایک خاص اسکیم کی شروعات کی گئی تھی۔

سِوِل خدمات میں اقلیتی طبقات کی نمائندگی اُن کی آبادی کے تناسب کے مقابلے میں لگاتار کمتر رہا ہے۔ عملہ، عوامی شکایت اَور پینشن وزرات، عملہ اَور تربیت محکمہ (ڈی او پی ٹی) کے ذریعے مطلع کئے گئے مُطابق، اقلیتی امیدوار کی بھرتی سال 2007 08، 2008 09، 2009 10 اَور 2010 11 میں حسب ترتیب 8.23 %، 9.90 %، 7.28 % اَور 11.9 % تھی۔ یہ مسابقتی سِوِل خدمات امتحان کو کامیاب کرنے کے لئے اقلیتوں کو خاص مدد کی شکل میں منصوبہ بند مداخلت کی ضرورت کو دِکھاتا ہے۔

مقصد

اِس اسکیم کا مقصد یونین عوامی خدمات کمیشن، اہلکاری انتخاب کمیشن اَور ریاست عوامی خدمات کمیشن کے ذریعے منعقد شروعاتی امتحان کو کامیاب کرنے والے اقلیتی امیدوار کو مالی امداد میسّر کرانا ہے تاکہ وہ یونین اَور ریاست سرکاروں کی سِوِل خدمتوں میں تقرری کے لئے مقابلہ کرنے میں مناسب طور پر قابل ہو سکیں اَور گروپ ' اے ' اَور ' گروپ بی ' (یونین عوامی خدمات کمیشن (یوپی ایس سی)؛ ریاستی عوامی خدمات کمیشن (ایس پی ایس سی)اَور اہلکار انتخاب کمیشن (ایس ایس سی)وغیرہ کے گزیٹیڈ اَور غیر گزیٹیڈ عہدہ)کے شروعاتی امتحان کو کامیاب کرنے والے امیدوار کو براہ راست مالی امداد دیتے ہوئے سِوِل خدمتوں میں اقلیتوں کی نمائندگی کو بڑھانا ہے۔

تکمیل کنندہ ایجنسی اَور اہلیت

اقلیتی معاملات وزرات تکمیل کنندہ ایجنسی ہوگا اَور مشتہرہ اقلیتی طبقات سے وابستہ صرف وہی امیدوار جو یوپی ایس سی ؛ ایس پی ایس سی اَور ایس ایس سی وغیرہ کے ذریعے آیوجِت شروعاتی امتحان کو کامیاب کرتے ہیں اَور دیگر تمام اہلیتی معیاری لیول اَور شرائط پُوری کرتے ہیں، پَر ہی اسکیم کے تحت مالی امداد کے لئے غور کیا جائے‌گا۔ اسکیم کے اہلیتی معیاری لیول اَور شرائط ذیلی طورپر ہوں‌گی

  1. امیدوار قَومی اقلیت کمیشن قانون، 1992 کی دفعہ 2 (گ)کے تحت مشتہرہ اقلیتی طبقات میں سے کِسی ایک سے وابستہ ہونا چاہئے اَور اُس نے یو پی ایس سی، ایس پی ایس سی یا ایس ایس سی وغیرہ کے ذریعے منعقد شروعاتی امتحان پاس کیا ہو۔
  2. امیدوار کی تمام ذرائع سے کُل پاریوارِک آمدنی 4.5 لاکھ روپیے سالانہ ' سے زیادہ نہیں ہونی چاہئے۔
  3. امیدوار کے ذریعے مالی امداد صرف ایک ہی بار حاصل کی جا سکتی ہے۔ امیدوار مرکزی یا ریاستی سرکاروں / یونین ریاست علاقہ انتظامیہ کی دیگر کِسی ایسی ہی اسکیم کا فائدہ لینے کا اہل نہیں ہوگا۔ اَگر امیدوار دیگر اسکیم کا انتخاب کرتا ہے / کرتی ہے، تو اُس کو اِس وزرات سے دعویٰ کو چھوڑنا ہوگا اَور اَگر وہ پہلے ہی فائدہ لے چُکا ہو، تو اُس کو رقم کو 10 % سود سَمیت لَوٹانا ہوگا۔ اُس کو اِس مقصد کا حلف نامہ دینا ہوگا کہ وہ دیگر کِسی ذرائع سے ایسا نفع حاصل نہیں کر رہا ہے / کر رہی ہے۔

نوٹ تمام ذرائع سے آمدنی، جو پیرا 3 (ii)میں 4.5 لاکھ روپیے کی شکل میں مذکور کی گئی ہے، 12وِیں اسکیم کی مدت اَور اِس کے بعد کریمی لیئر چھوٹ / سیلِنگ میں تبدیلی ہونے پر تبدیلی کے تابع دار ہے۔

عمل

اقلیتی معاملات وزرات ہرسال اخباروں اَور اپنی ویب سائٹ کے ذریعے اہل امیدوار سے درخواست مدعو کرنے کے لئے اشتہار دے‌گا۔ اہل امیدوار اسکیم کے تحت اِس مقصد سے تیار کئے گئے فارم میں اِس وزرات کو درخواست کریں‌گے۔

لاگت / مُستفید کی تعداد

ہرایک سال اسکیم کے تحت ملک بھر میں زیادہ سے زیادہ 800 امیدوار کو اہلیت معیاری لیول حاصل کرنے پر تب تک مالی امداد دی جائے‌گی، جب تک کہ بجٹی تقسیم ختم نہ ہو جائے۔ امیدوار کا انتخاب کِسی خاص طبقے کے لئے میسّر سلاٹس کی محدود تعداد کے معاملے میں میرِٹ کی بنیاد پر کیا جائے‌گا۔ مردم شماری، 2011 کی تعداد میسّر ہونے تَک وزرات مردم شماری، 2001 کے آنکڑوں کا استعمال کرے‌گا۔ مختلف مشتہرہ اقلیتی طبقات کو فائدہ کی حقیقی تقسیم ذیلی طورپر ہوگی-

مسلم 568 ؛
عیسائی 96 ؛
سکھ 80 ؛
بُدھ 32 ؛
پارسی 7 ؛ اَور
جَین 17

مالی امداد کی در زیادہ سے زیادہ پچاس ہزار روپیے (50،000 روپیے گزیٹیڈ عہدے کے لئے اَور 25،000 روپیے غیر گزیٹیڈ عہدے کے لئے)صرف ہوگی۔ یہ مالی امداد اُن اقلیتی امیدوار کے لئے ہوگی، جِنہوں نے یونین عوامی خدمات کمیشن ؛ اہلکار انتخاب کمیشن ؛ یا ریاست عوامی خدمات کمیشن وغیرہ کے ذریعے منعقد گروپ ' ک ' اَور ' کھ ' سِوِل خدمتوں کے شروعاتی امتحان کامیاب کئے ہوں۔

امیدوار کے لئے اصول اَور شرائط

  1. 1۔ امیدوار کو یونین عوامی خدمات کمیشن، ریاست عوامی خدمات کمیشن، اہلکار انتخاب کمیشن وغیرہ کے ذریعے منعقد شروعاتی امتحان یا گروپ ' ک ' اَور ' کھ ' (گزیٹیڈ اَور غیر گزیٹیڈ)سِوِل خدمات کے لئے منعقد مساوی امتحان کامیاب کرنے کا ثبوت پیش کرنا ہوگا۔ اِس میں رول نمبر پرچی، پہچان نامہ اَور نتیجہ شامل ہے۔
  2. 2۔ امیدوار کو پریوار کی تمام ذرائع سے ہونے والی سالانہ آمدنی کا شہادت نامہ طبقہ شہادت نامہ خود خط اعلان نامہ کی شکل میں پیش کرنا ہوگا۔

ماخذ : حکومتِ حند کا اقلیتی معاملات وزرات

1.875
اپنی تجاویز ارسال کریں (اگر مذکورہ بالا مواد پر آپ کو کوئی تبصرہ/تجویز دینی ہو تو براہ کرم یہاں درج کریں))
Enter the word
Back to top