شیئر
Views
  • صوبہ Open for Edit

صفائی

صحت سے متعلق معلومات بانٹنا اَور اُس پر کام کرنا کیوں ضروری ہے۔ بچّوں کی تمام بیماریوں اَور موتوں میں سے آدھِی واردات گَندے ہاتھوں سے،یا گَندے کھانے اَور پانی سے اُن کے منھ میں جانے والے خرد جَراثِیموں کی وجہ سے  ہوتی ہے۔اِن میں سے کئی خرد جَراثِیم انسان اَور جانوروں کے پاخانے سے بھی آتے ہیں۔ اَچّھی صحت عادتوں کی وجہ سے بہت سی بیماریوں سے،بالخصوص : ڈائریا سے،حفاظت ہو سکتی ہے۔ تمام قسم کا پاخانہ طہارت خانہ یا بیت الخلا میں پھینکنا ؛ بچّوں کے پاخانے سے اتصال کرنے کے بعد یا بچّوں کو کھانا کھِلانے سے پہلے یا کھانے کو چھُونے سے پہلے ہاتھ صابن اَور پانی کے ساتھ یا راکھ اَور پانی کے ساتھ اچھی طرح صاف کرنا ؛ اَور اِس کی تصدیق کر لینا کہ جانوروں کا پاخانہ گھر، راستہ، کنواں اَور بچّوں کے کھیلنے کے مقام سے دور رکھا جانا چاہئے۔

جمع ہوکر طہارت خانہ اَور بیت الخلا بنانا اَور اُن کا استعمال کرنا، سر چشمہ کی حفاظت کرنا اَور کوڑا اَور دیگر گندگی،پانی جیسی چیزوں کا محفوظ حل کئے جانے کی سماج میں سبھی کو ضرورت ہے۔ سرکاروں کے ذریعے سماج کو کم خرچیلے طہارت خانہ اَور بیت الخلا بنانے کے لئے ضروری اطلاع دینا بہت ضروری ہے کیونکہ یہ تمام پریواروں کے ذریعے مَنقُول ہے۔شہری علاقوں میں،کم ارزائی (کم خرچیلے)ڈرینیج سسٹم اَور صفائی انتظام،نفیس مشروب پانی کا انتظام اَور کوڑا اِکٹّھا کرنے جیسے کاموں کے لئے سرکاری مدد کی ضرورت ہوتی ہے۔

صفائی اہم پیغام 1

سارا پاخانہ محفوظ طریقے سے دور مقام پر پھینک دیا جانا چاہئے۔طہارت خانہ یا بیت الخلا بہترین راستہ ہے۔
بہت سی بیماریاں،بالخصوص : پیچش (ڈائریا)،انسانی پاخانے میں پائے جانے والے خرد جَراثِیموں کی وجہ سے ہوتی ہیں۔اَگر خرد جَراثِیم کھانا،یا پانی،ہاتھ،برتن،یا کھانا پکانے کے مقام اَور کھانا کھانے کے مقام پر پہُنچ گئے،تو وہ منھ کے ذریعے نِگلے بھی جا سکتے ہیں اَور اس طرح بیماری پھَیلا سکتے ہیں۔
خرد جَراثِیموں کو پھَیلنے سے روکنے کے لئے سَب سے بہترین تدبیر ہے سارے پاخانہ چاہے وہ انسان کا ہو یا جانوروں کا محفوظ طریقے سے پھینکا جائے۔ انسان پاخانے کو طہارت خانہ یا بیت الخلا پھینکا جانا چاہئے۔بیت الخلا کو صاف رکھا جانا چاہئے۔جانوروں کا پاخانہ گھر،راستے اَور بچّوں کے کھیلنے کے مقام سے دور رکھنی چاہئے۔
اَگر طہارت خانہ یا بیت الخلا کا استعمال کرنا مُمکِن نہ ہو تو،سبھی کو گھر، راستے، پانی کے سر چشمہ اَور بچّوں کے کھیلنے کے مقام سے کافی دور جاکر پاخانہ کرنا چاہئے اَور پاخانے کو فوراً مٹی میں دَبا دینا چاہئے۔
تمام قسم کا پاخانہ،بالکل نَنہیں بچّوں کا بھی،خرد جَراثِیموں کا ٹرانسفر کرتا ہے اَور اس لئے خطرناک ہے۔اَگر بچّے بِنا طہارت خانہ یا بیت الخلا کے، لیٹرِن یا پاٹی کے بِنا ملتیہاگ کریں تو اُن کا پاخانہ فوراً طہارت خانہ یا بیت الخلا میں ڈال دینا چاہئے یا گاڑ دینا چاہئے۔
لیٹرِن اَور بیت الخلا اکثر صاف رکھنے چاہِۓ۔ لیٹرِن کو ڈھک کر رکھنا چاہئے اَور طہارت خانوں میں فلش چلا دینا چاہئے۔مقامی سرکاریں اَور این جی او کم خرچ میں سینِٹری لیٹرِن بنانے کے لئے صلاح دےکر طبقات کی مدد کر سکتی ہیں۔

صفائی اہم پیغام 2

بچّوں سَمیت،پریوار کے تمام ممبروں کے لئے، پاخانے سے رابطہ کے بعد،کھانے کو چھُونے سے پہلے اَور بچّوں کو کھِلانے سے پہلے،ہاتھ صابن اَور پانی یا راکھ اَور پانی کے ساتھ اچھی طرح دھونا ضروری ہے۔

ہاتھ صابن اَور پانی یا راکھ اَور پانی کے ساتھ اچھی طرح دھونے سے خرد جَراثِیم نِکل جاتے ہیں۔ صرف انگلیوں کو کھنگالنا ہی کافی نہیں ہے دونوں ہاتھوں کو صابن یا راکھ سے دھونا چاہئے۔ اِس کی وجہ سے خرد جَراثِیموں اَور گندگی کا منھ میں جانے سے حفاظت ہوتی ہے۔ہاتھوں کو دھونے سے کیڑے کا انفیکشن بھی دور رہتا ہے۔صابن اَور پانی یا راکھ اَور پانی کو بیت الخلا کے باہر سہولت سے رکھا جانا چاہئیے۔

  • یہ بالخصوص : اہم ہے کہ ابھی جِس بچّے نے پاخانہ کیا ہو اُس کے چوتڑ دھونے کے بعد ہاتھ دھونا بہت ہی ضروری ہے۔ اسی طرح جانوروں کے پاخانہ اتصال یا کَچّا کھانا چھُونے پر بھی ہاتھ دھونا ضروری ہے۔
  • کھانا پکانے،پروسنے یا کھانے سے،یا بچّوں کو کھانا کھِلانے سے پہلے ہاتھ دھونا بہت ضروری ہے۔پاخانہ کرنے کے بعد اَور کھانا کھانے سے پہلے دونوں ہاتھوں کو اچھی طرح دھونے کی عادت بچّوں میں ڈالنی چاہئے جِس سے اُن کی بیماریوں سے حفاظت ہو سکے۔

بچّے اکثر : منھ میں ہاتھ ڈالتے رہتے ہیں،اس لئے بچّوں کے ہاتھ اکثر دھونا اہم ہے، بالخصوص : جب وہ گندگی یا جانوروں کے ساتھ کھیل رہے ہوں۔ بچّے آسانی سے کیڑے سے جراثیم زدہ ہو جاتے ہیں،جِس سے جسم کے غذائی مادہ کم جاتے ہیں۔کیڑا اَور اُن کے اَنڈے انسانی پاخانہ اَور پیشاب میں،سَطحی پانی اَور زمین میں،اَور گَندی طرح سے پکائے ہوئے گوشت میں پائے جاتے ہیں۔بچّوں کو طہارت خانوں کے پاس یا پاخانہ کرنے والے مقام کے پاس نہیں کھیلنا چاہئے۔ طہارت خانوں اَور بیت الخلا کے پاس جوتے پہننے سے انفیکشن سے حفاظت ہوتی رہتی ہے،اِس سے حشرات پَیر کی جلد کے ذریعے جسم میں داخلہ نہیں کر سکتے۔

  • ایسی جگہ رہنے والے بچّوں کو جہاں یہ کیڑے-حشرات ہیں،سال بھر میں دو یا تین بار اَچھے اینٹی ہیلمینٹِک علاج دینے چاہِۓ۔

صفائی اہم پیغام 3

صابن اَور پانی سے روز چہرہ دھونے سے آنکھوں کے انفیکشن سے حفاظت ہوتی ہے۔ دنیا کے کچھ حصوں میں،آنکھوں کا انفیکشن ٹرکوما کی طرف لے جاتا ہے جِس کی وجہ سے اندھاپن بھی آ سکتا ہے۔

  • گَندا چہرہ مکھیوں کو مسحور کرتا ہے، اَور وہ ایک آدمی سے دُوسرے آدمی تَک خرد جَراثِیم پھَیلاتے ہیں۔اِس سے آنکھیں خراب ہو سکتی اَور دیکھنے میں پریشانی ہو سکتی ہے۔اَگر آنکھیں صاف اَور صحت مند نہ رکھی جائیں تو انفیکشن ہو سکتا اَور اندھاپن بھی آ سکتا ہے۔
  • اَگر آنکھیں صاف اَور صحت مند ہیں،سفید حصہ صاف ہے،آنکھیں نم اَور چمکدار  ہیں، اَور نظر تیز ہے۔ اَگر آنکھیں بہت زیادہ سوکھی یا لال اَور سُوجی ہوئی، اَگر کِسی مادے کی کوئی روانی ہو رہی ہو یا دیکھنے میں پریشانی آ رہی ہو تو جلد سے جلد بچّے کو صحتی اہلکار کو دِکھانا چاہئے۔

صفائی اہم پیغام 4

پانی کِسی محفوظ سر چشمہ سے ہی لیں یا پھِر صاف کیا ہوا پانی ہی استعمال کریں۔پانی صاف رکھنے کے لئے پانی کے برتن ڈھک‌کر رکھنا ضروری ہے۔

  • جب صاف پانی کی حسب ضرورت فراہمی ہوتی ہے تب پریواروں کو بہت تھوڑی بیماریاں ہوتی ہیں اَور اُن کو معلوم ہوتا ہے کہ کس طرح جَراثِیموں کو دور رکھیں۔
  • اَگر پانی صاف نہیں ہو تو اُس کو اُبال‌کر یا چھان‌کر صاف کیا جا سکتا ہے۔
  • صاف پانی کے سر چشمہ میں اچھی طرح سے تعمیر شدہ اَور کافی رکھ رکھاو پر مشتمل پائپ سسٹم،ٹیوب ویلس،محفوظہ کھُدے ہوئے کنویں اَور جھرنے مشمُول ہوتے ہیں۔ پانی کے غیر محفوظ سر چشمہ ہیں تالاب،ندیاں،کھُلی ٹنکیاں اَور باولی (ایسا بہت بَڑا کنواں جِس میں نیچے اُتر‌کر جانے کے لئے بہت ساری سیڑھیاں ہوتی ہیں)اِن سے لیا ہوا پانی اُبالنے کے بعد استعمال کر سکتے ہیں۔پانی کو صاف رکھنے کے لئے اُس کو صاف برتن میں ڈھک‌کر رکھنا چاہئے۔

پریوار اَور طبقہ اپنے پانی کے سر چشمہ کو اس طرح صاف رکھ سکتے ہیں-

  • کنواں کو ڈھک‌کر رکھیں اَور اُس پر ہینڈ پمپ لگائیں
  • گھروں میں سے باہر نِکلنے والا استعمال کیا ہوا پانی اَور پاخانہ پانی کے ایسے ذریعہ سے جہاں سے پینے کے لئے،کھانا پکانے کے لئے،اَور کپڑے دھونے کے لئے پانی مِلتا ہے،بہت دور  پھینکیں
  • پانی کے سر چشمہ سے بیت الخلا کم سے کم 15 میٹر کی دوری پر باندھنا چاہئے
  • بالٹیاں،رَسَّہ اَور مرتبان جِس میں پانی رکھتے ہیں،ہمیشہ ایک دم صاف اَور پاک رکھنے چاہئے اَور اُن کو صاف جگہ پر رکھنا چاہئے،زمین پر نہیں
  • جانوروں کو پینے کے پانی کے سر چشمہ کو پریوار کے رہنے کی جگہ سے دور رکھنا چاہئے
  • کسی بھی پانی کے سر چشمہ کے آس پاس جراثیم کش کا استعمال نہیں کرنا چاہئے

پریوار اپنے گھر میں پانی اس طرح صاف رکھ سکتے ہیں :

  • پینے کا پانی صاف اَور ڈھکے ہوئے برتن میں رکھیں
  • گَندے ہاتھوں سے صاف پانی کو نہ چھُوئیں
  • کِسی کسؤلی یا کپ سے پانی کے برتن میں سے پانی لیں
  • پانی کے برتن پر نَل لگا لیں
  • پانی کے برتن کے اندر کسی کو بھی ہاتھ نہ ڈالنے دیں اَور نہ ہی سیدھے اُسی پانی کے برتن میں سے کسی کو پانی لینے دیں
  • جانوروں کو بھرے ہوئے پانی سے دور رکھیں

اَگر پینے کے پانی کے بارے میں کوئی بھی کشمکش ہو،تو مقامی اعلی افسران سے رابطہ کیا جا سکتا ہے۔

صفائی اہم پیغام 5

کَچّا یا بچا ہوا کھانا خطرناک ہو سکتا ہے۔کَچّا کھانا دھوکر اَور پکاکر کھائیں۔پَکا ہوا کھانا پوری طرح سے گرم کرکے بِنا دیر کھانا چاہئے۔

  • کھانے کو پوری طرح پکانے سے اُس کے خرد جَراثِیم مر جاتے ہیں۔کھانا،بالخصوص : گوشت اَور مرغے کے گوشت کو بہت اچھی طرح پکایا جانا چاہئے۔
  • سامانیہ گرم کھانے میں جَراثِیم تیزی سے بڑھتے ہیں۔پکانے کے بعد کھانا بہت جلدی کھا لینا چاہئے تاکہ کھانے میں جَراثِیم آ ہی نہ پائیں۔
  • اَگر کھانا دو یا زیادہ گھنٹوں کے لئے رکھنا ہے،تو اُس کو بہت گرم رکھنا چاہئے یا پھِر بالکل ٹھَنڈا رکھنا چاہئے۔
  • اَگر پکایا ہوا کھانا دُوسری بار کے کھانے تَک رکھنا ہو،تو اُس کو ڈھک‌کر رکھنا چاہئے تاکہ مکھیاں اَور کیڑا مکوڑے سے محفوظ رہیں اَور کھانا کھاتے وقت اُس کو پوری طرح سے گرم کر لیں۔
  • دہی اَور کھَٹّا دلیا کھانے میں بہت اَچھا ہوتا ہے کیونکہ اِس کے تیزابوں کی وجہ سے جَراثِیم بڑھ نہیں پاتے۔

کَچّا کھانا،بالخصوص : پالٹری اَور سَمُندری کھانا،اِن میں اکثر جَراثِیم ہوتے ہیں۔پَکا ہوا کھانا کَچّے کھانے میں سے جَراثِیم لے سکتا ہے۔اس لئے کَچّے اَور پکے ہوئے کھانے کو الگ رکھنا چاہئے وَرنہ پکے ہوئے کھانے میں کَچّے کھانے سے جَراثِیم آ ہی جائیں‌گے۔ چاقو،سبزی کاٹنے کے بورڈس اَور کھانا پکانے کی جگہوں کی صفائی کا خاص دھیان رکھا جانا چاہئے اَور اِن سب مادہ کو استعمال کے بعد دھوکر رکھنا چاہئے۔

  • ماں کا دودھ نَنہیں اَور چھوٹے بچّوں کے لئے محفوظ ہے۔ جانوروں کا تازہ اُبلا ہوا دودھ بِنا اُبلے دودھ سے زیادہ محفوظ ہے۔
  • ماں کا دودھ نِکال‌کر کمرے کے درجۂ حرارت پر،ایک صاف اَور ڈھکے ہوئے برتن میں آٹھ گھنٹوں تَک رکھا جا سکتا ہے۔
  • نَنہیں اَور چھوٹے بچّوں کا کھانا بناتے وقت خاص دھیان رکھنا چاہئے۔اُن کا کھانا تازہ بنانا چاہئے اَور اُس کو دیر تک رکھا بھی نہیں جانا چاہئے۔
  • پھل اَور سبزیاں اَگر نَنہیں اَور چھوٹے بچّوں کا کَچّی کھِلائی جانے والی ہیں تو پہلے اُن کو صاف پانی سے اچھی طرح دھو لیں کیونکہ جراثیم کش اَور دیگر دوائی پھل اَور سبزیوں پر دِکھائی نہیں دیتِیں لیکِن خطرناک ہو سکتی ہیں۔

صفائی اہم پیغام 6

کھانا،برتن اَور کھانا پکانے کے مقام کو صاف رکھنا چاہئے۔کھانا برتن میں ڈھک‌کر رکھا جانا چاہئے۔
کھانے پر بیٹھے ہوئے جَراثِیم نِگلے جا سکتے ہیں اَور بیماری لا سکتے ہیں۔کھانے کو جَراثِیموں سے بچانے کے لئے :

  • کھانا پکانے کے مقام صاف رکھنے چاہئے
  • چاقو،کھانا پکانے کے برتن،پتیلے اَور پلیٹیں صاف اَور ایک کر رکھنی چاہئے۔
  • پلیٹیں اَور برتن کو پوچھنے کے لئے استعمال کئے جانے والے کپڑے دھوکر دھوپ بتی میں سُکھانے چاہئے۔ پلیٹیں،برتن اَور پتیلے کھانا کھاتے ہی روز صاف مانجھ‌کر ایک رَیک میں سُکھانے چاہئے۔
  • کھان کو جانوروں اَور کیڑے مکوڑوں سے بچانے کے لئے ڈھک‌کر رکھنا چاہئے
  • دودھ پینے کی بوتل یا ٹیٹس کا استعمال نہ کریں کیونکہ اُن میں جَراثِیم آ سکتے ہیں جِس سے ڈائریا ہو سکتا ہے جب تک کہ اِن بوتل کو ہر بار اچھی طرح اُبلتے ہوئے پانی سے دھوکر نہ رکھا جائے۔ بچّوں کو ماں کا دودھ ہی دینا چاہئے یا چَوڑے کپ سے اُن کو دودھ پِلانا چاہئے۔

صفائی اہم پیغام 7

گھر کے پُورے کوڑے کَرکَٹ کا محفوظ حل بیماریوں سے حفاظت کرتا ہے۔
کھانے پر بیٹھے ہوئے جَراثِیم نِگلے جا سکتے ہیں اَور بیماری لا سکتے ہیں۔کھانے کو جَراثِیموں سے بچانے کے لئے :
جَراثِیموں کا پھیلاؤ مکھیوں،تِل چَٹّے اَور چوہے کے ذریعے ہوتا ہے جو کوڑے کَرکَٹ میں کھانا ڈھونڈنے کے لئے گھُس‌کر جَراثِیموں کو جگہ دیتے ہیں۔جیسے سبزیوں کے چھِل‌کر اَور پھلوں کے حصے وغیرہ۔
اَگر کوڑے کا مشترکہ مَجمُوعہ نہیں کیا جا رہا،تو ہرایک پریوار کو ایک کوڑےدان کی ضرورت ہوگی جہاں ہرایک گھریلو کوڑا جلایا یا دَبایا جا سکتا ہے۔
آس پاس کے علاقے کو پاخانہ،کوڑا وغیرہ،استعمال کیا ہوا پانی اِن سب سے آزاد اَور صاف رکھنے سے بیماریوں سے حفاظت ہوتی ہے۔استعمال کیا ہوا پانی اِکٹّھا کرنے کے لئے ایک گڈھا کھودنا چاہئیے جِس سے کہ یہ پانی کِچن گارڈن یا کھیتوں کی طرف نِکال دیا جائے۔
جراثیم کش اَور نباتاتی جیسے کیمیا۔ اکسیر،اَگر اُن کی ایک انتہائی چھوٹِی مقدار بھی کھانا، ہاتھ یا پیر یا پانی میں گھُل جائے تو خطرناک ہو سکتے ہیں۔کیمیا کا کام کرتے ہوئے استعمال کئے ہوئے کپڑے اَور برتن کو گھریلو استعمال کرنے والے پانی کے سر چشمہ کے پاس نہ دھوئیں۔
جراثیم کش اَور دیگر کیمیا۔اکسیر کا استعمال گھر کے آس پاس یا پانی کے سر چشمہ کے پاس نہیں کیا جانا چاہئے۔کیمیا کا ذخیرہ پانی کے سر چشمہ یا کھانے کے مقام کے پاس نہیں کرنا چاہئے۔کبھی بھی اناج کا ذخیرہ کیمیا، جراثیم کش کے ڈبوں وغیرہ میں نہ کریں۔

ماخذ : یونیسیف

2.9
اپنی تجاویز ارسال کریں (اگر مذکورہ بالا مواد پر آپ کو کوئی تبصرہ/تجویز دینی ہو تو براہ کرم یہاں درج کریں))
Enter the word
Back to top