ہوم / صحت / صحت کی اسکیمیں / جننی سُرکشا یوجنا ( جے ایس وائی )
شیئر

جننی سُرکشا یوجنا ( جے ایس وائی )

اِس صفحے میں جننی سُرکشا یوجنا( جے ایس وائی ) کی معلومات دی گئی ہے

کردار

جننی سُرکشا یوجنا ( جے ایس وائی ) والدہ اَور نوزائیدہ بچوں کی شرح اموات کو کم کرنے کے لئے حکومتِ ہند کے قَومی دیہی صحتی مِشن ( این آر ایچ ایم ) کے ذریعے چلایا جا رہا ایک محفوظ مادریت مداخلت ہے ۔ قَومی دیہی صحت مِشن کے تحت ولادت اَور بچہ صحت پروگرام کے تحت زچہ و بچہ کی شرح اموات کو گھٹانا اہم مقصد رہا ہے ۔ اِس مِشن کے تحت صحت اَور  وزارت صحت اور خاندانی بہبود   نے کئی نَئے قدم اُٹھائے ہیں جِن میں جننی سُرکشا یوجنا بھی شامل ہے ۔ اِس کی وجہ سے ادارہ جاتی ولادت میں کافی اضافہ ہوا ہے اَور اِس کے تحت ہرسال ایک کروڑ سے زیادہ خواتین نفع اُٹھا رہی ہیں ۔ جننی سُرکشا یوجناکی شروعات ادارہ جاتی ولادت کو بڑھاوا دینے کے لئے کی گئی تھی جِس سے بچہ جنم تربیت یافتہ دائی / نرس / ڈاکٹروں کے ذریعے کرایا جا سکے اَور ماں اور نوزائیدہ بچوں کو حمل سے متعلق پیچیدگیوں اَور موت سے بچایا جا سکے ۔

اسکیم کا مقصد

زچہ و بچہ کی شرح اموات کو کم کرنا

منصوبہ بندی کی حکمت عملی

جے ایس وائی اسکیم کا مقصد غریب حاملہ خواتین کو رجسٹرڈ صحتی اداروں میں جنم دینے کے لئے کے لئے حوصلہ افزائی کرنا ہے ۔ جب وہ جنم دینے کے لئے کِسی ہسپتال میں نامزدگی کراتے ہیں ، تو حاملہ خواتین کو ولادت کے لئے ادائگی کرنے کے لئے اَور ایک حوصلہ افزائی فراہم کرنے کے لئے نقد مدد دی جاتی ہے ۔

اسکیم کی صفات اَور نقد امداد

اِس اسکیم میں جِن ریاستوں ادارہ جاتی ولادت کی شرح کم ہے ( ایل پی ایس ) ( اُتّر پرَدیش ، اُتّراکھَنڈ ، بِہار ، جھارکھنڈ ، مَدھیہ پرَدیش ، چھَتّیس گَڑھ ، اسم ، راجَستھان ، اُڑیسا اَور جمّو کی ریاستوں مطاہرہ کے طور پر کشمیر ) ، باقی ریاستوں میں تنظیمی ولادت کی شرح بُلند ہے ( ایچ پی ایس ) اِسی بنیاد پر نقد سہولیات یا نفع دی جاتی ہے جو اس طرح ہیں

دیہی علاقوں میں

زمرہ

حاملہ خاتون کو مِلنے والی رقم

آشا کو مِلنے والی رقم

کُل مِلنے والی رقم

ایل پی ایس

1400

600

2000

ایچ پی ایس

700

600

1300

شہری علاقوں میں

زمرہ

حاملہ خاتون کو مِلنے والی رقم

آشا کو مِلنے والی رقم

کُل مِلنے والی رقم

 

ایچ پی ایس

 

1000

 

400

 

1400

 


-

آشاکا کردار

اِن کم مظاہرہ کرنے والی ریاستوں میں ، امید تسلیم شدہ سماجی صحتی کارکن جے ایس وائی کے تحت نفع کا استعمال کرنے کے لئے غریب حاملہ خواتین کی مدد کے لئے ذمہ دار ہیں ۔


امید کی کردار مندرجہ ذیل ہیں -

  1. اپنے علاقے میں اُن حاملہ خواتین کی پہچان کرنا جو اِس اسکیم سے نفع کے لئے اہل ہیں۔
  2. حاملہ خواتین کو تنظیم سے متعلق ولادت کے فوائد کے بارے میں بتانا۔
  3. حاملہ خواتین کی نامزدگی میں مدد کرنا اَور کم از کم 3 ولادت ثابِق جانچ حاصل کرنا،جِس میں ٹِٹنیس کے انجکشن اَور آیرنت فولِک تیزاب گولیاں شامل ہیں۔
  4. جے ایس وائی کارڈ اَور بینک کھاتا سَمیت ضروری شناختی کارڈ حاصل کرنے میں حاملہ خواتین کی مدد کرنا۔
  5. حاملہ خواتین کے لئے الگ الگ باریک جنم اسکیم تیار کرنا،جِس میں اُن قریبی صحتی اداروں کی پہچان کرنا شامل ہے جہاں اُن کو ولادت کے لئے بھیجا جا سکتا ہے۔
  6. حاملہ خواتین کو ثابِق مقررہ صحتی مرکز پر ایسکارٹ کرنا جہاں اُن کے بچہ ہونے ہیں اَور اُن کو چھٹی مِلنے تَک اُن کے ساتھ رہنا۔
  7. ٹی بی کے خلاف بی سی جی ٹیکہ کاری سمیت،نوازائدہ بچوں کے لئے ٹیکہ کاری کا انتظام کرنا۔
  8. نفلی سفر کے لئے پیدائش کے 7 دنوں کے اندر خواتین سے مِلنا۔
  9. دودھ پلانے میں  مدد فراہم کرنا۔
  10. خاندانی منصوبہ بندی کو بڑھاوا دینا۔


ماخذ نیشنل ہیلتھ مشن
رہنمائ جننی سُرکشا یوجنا

3.0
اپنی تجاویز ارسال کریں (اگر مذکورہ بالا مواد پر آپ کو کوئی تبصرہ/تجویز دینی ہو تو براہ کرم یہاں درج کریں))
Enter the word
Related Languages
Back to top