ہوم / سماجی بہبود / مختلف - معذور بہبود / ۔ممکن الحصول بھارت تحریک
شیئر
Views
  • صوبہ Open for Edit

۔ممکن الحصول بھارت تحریک

اس پورٹل میں ممکن الحصول بھارت تحریک سے متلق معلومات مہیا کروائی جاتی ہیں۔ سوگامیہ بھارت ابھیان۔

اپاہج و معزور اشخاص کے حقوق

معزور و اپاہج اشخاص کے لیے عالمی سطح پر پہونچ بنانے اور دوسرے اشخاص کے مقابلے میں مساوی مواقع پیدا کرنے اور ان کو خود مختار بنانے اور ایک معاشرے میں رہتے ہوئے زندگی کے تمام شعبوں میں شمولیت کے قابل بنانا۔

اپاہج اشخاص (مواقع و مساوی مواقع ان کے حقوق کا تحفظ اور مکمل شمولیت) 1995 ایکٹ کے دفعہ 45, 44 اور 46 کے مطابق غیر متعصب ٹرانسپورٹ( باربرداری) کی سہولیت اور ساتھ ہی سڑکوں اور تحفظ ماحول میں غیر متعصب ہونا۔

معزور و اپاہج اشخاص کے حقوق سے متعلق اقوام متحدہ کے عہدہ پیمان کے ساتھ ہندوستان نے آئین کے آرٹکل 9 کے ذیل میں حکومت کو اس بات کا پابند بنایا ہے کہ وہ اپاہجوں کے لیے ان سہولیات تک پہونچ بنائے (ا) معلومات (ب) ٹرانسپورٹیشن یا باربرداری (پ) صحت آور ماحول (ت) ذرائع ترسیل وا بلاع(ٹ) بنیادی سہولیات کے ساتھ ساتھ نا گہانی سہولیات وغیرہ وغیرہ شعبہ ایشاء اور صلح کن کے لیے (UNESCAP) اقوام متحدہ کے معاشی اور معاشرتی کیمشن کے دوسرے اجلاس کا انعقاد کرے گا۔

ایشیاء اور پیسفک کے اپاہج اور معزور لوگوں کے لیے کام کرنے والے گروپ نے 2, 3 مارچ 2015 کو صلح کن گروپ کے تعاون سے دہلی میں اجلاس منعقد کیا۔ کام کرنے والی یہ گروپ UNESCAP سکریٹرٹ کی طرف سے تشکیل دیا گیا تاکہ ’’حق کو حقیقی بنایا جائے) منصوبے کو معزوراور بے بس لوگوں کے لاگو کیا جاسکے۔ حدف نمبر 3 کے مطابق صحت آور ماحول ، عوامی باربرداری ، معلومات ، جانکاری اور ترسیل وابلاع کی پہونچ کو تحریک دی جائے۔

ممکن الحصول بھارت تحریک ( سوگامیہ بھارت ابھیان)

شعبۂ برائے بہبودی اپاہج، وزارت سماجی انصاف وا فلاح عامہ ’’ممکن الحصول بھارت تحریک (سوگامیہ بھارت ابھیان) کو ملک بھر میں متعارف کروائے گی تاکہ معزور اور اپاہج لوگوں کو ہر طرح سے برابر مواقع ملیں اور وہ خود کفیل زندگی گزاریں اور زندگی کے تمام شعبوں میں یکسان طور پر شرکت کرتے ہوئے سماج میں اپنا مقام حاصل کر سکیں۔ اس تحریک کا بنیادی مقصد صحت آور ماحول ، بار برداری ، معلومات اور ترسیل وابلاع کی سہولیات تک پہونچ بنانا ہے۔

اپنائی جانے والی حکمت عملی

اس تحریک کے لیے ایک کیثر الحقاصد حکمت عملی اپنائی جائے گی جن میں ان نکات کو بنیادی حیثیت حاصل ہوگی۔ (ا) تحریک کی رہنمائی (ب) عوام الناس کی بیداری (پ) ورکشاپوں کے ذریعے طاقت دینا (ت) دخل اندازی (قانونی ڈھانچہ ، تکنیکی حل ، وسائل پیدا کرنا وغیرہ اور (ٹ) پبلک اور پرایویٹ پارٹنرشپ میں کارپوریٹ سیکڑکی کاوشوں کو مضبوطی دینا شعبۂ برائے بہبودی معزور ، صوبے کے ساتھ ایک ایم او یو پردستخط کرے گا کہ ممکن الحصول سے متعلق بیداری پیدا کرنے اس کو ممکن الحصول بنانے کے ساتھ ساتھ ٹرانسپورٹ اور ویب سائیٹ تک رسائی حاصل کرنے میں ہر ممکن تعاون دے گا۔

اس تحریک سے حاصل ہونے والے تجویزی سنگ میل

 

  • قومی مال اسباب اور تمام صوبجات کے مال اسباب کے کم از کم 50فی صد حکومتی عمارتوں کو جولائی2018 تک اپاہج اور معزور اشخاص کی پہونچ اور وسائی کے قابل بنایا جایا گا۔
  • ملک کے تمام بین الا قوامی ائرپورٹ اور ریلوے اسٹیشن A, A1 اورB درجات بھی جولائی 2016 تک ممکن الحصول بنا دئیے جائیں گے۔
  • تحریک کے مطابق جیسا وزارت سماجی انصاف اور فلاح نے حکمت عملی بنائی ہے کم از کم 10 فی صد حکومت کا اپنا پبلک ٹرانسپورٹ کیرئیر مارچ2018 تک اس طرح کے اشخاص کے لیے قابل حصول بنا دیا جائیگا۔
  • اس کے علاوہ اس بات کو بھی یقینی بنایا جائے گا کہ مرکزی اور صوبائی حکومتوں کی طرف سے جاری کیے جانے والے تمام پبلک ڈاکومینٹز کے کم از کم 50 فی صد کاغذات کو مارچ2018 تک اپاہج اشخاص کی پہنچ کے قابل بنایا جائے۔

مخرج

  1. پی بی آٹی
  2. شعبۂ برائے بہبودی اپاہج یا معزور وزارتِ سماجی انصاف و فلاح عامہ حکومتِ ہندوستان۔
2.6
اپنی تجاویز ارسال کریں (اگر مذکورہ بالا مواد پر آپ کو کوئی تبصرہ/تجویز دینی ہو تو براہ کرم یہاں درج کریں))
Enter the word
Related Languages
Back to top