ہوم / سماجی بہبود / اقلیتی فلاح و بہبود / قَومی اقلیتی ترقی اَور مالی کارپوریشن  ( این ایم ڈی ایف سی )
شیئر

قَومی اقلیتی ترقی اَور مالی کارپوریشن  ( این ایم ڈی ایف سی )

اِس صفحے میں قَومی اقلیتی ترقی اَور مالی کارپوریشن ( این ایم ڈی ایف سی ) سے منسلک معلومات دی گئی ہے ۔

این ایم ڈی ایف سی کیا ہے ؟


قَومی اقلیتی ترقی اَور مالی کارپوریشن ( این ایم ڈی ایف سی ) کا شمول 30 ستمبر ، 1994 کو کمپنی قانون 1956 کی دفع 25 کے تحت نفع مطلق کمپنی کے طور پر کیا گیا تھا ۔ قَومی اقلیتی کمیشن کے قانون 1992 میں تشریح شدہ اقلیتوں کی ترقی کے لئے یہ  کارپوریشن قومی  سطح کے اعلیٰ ادارہ کے  طور پر تعینات ہے ۔
این ایم ڈی ایف سی کا خاص فرمان اقلیتوں کو خودروزگار / آمدنی تخلیقی سرگرمیوں کے لئے رِیایتی در پر قرض عطا کرنا ہے ۔ قَومی اقلیت کمیشن کے قانون 1992 کے مُطابق ، ادھِسوچِت اقلیتی مسلم ، عیسائی ، سِکھ ، بُدھ اَور پارسی ہیں ۔ بعد میں ، جنوری 2014 میں جین طبقے کو بھی ادھِسوچِت اقلیتی طبقات کی فہرست میں شامل کر دیا گیا ۔ این ایم ڈی ایف سی کے قرض پروگراموں کے تحت کاریگروں اَور خواتین کو ترجیح دی جاتی ہے ۔

زیر ہدف گروہ

این ایم ڈی ایف سی کا خاص فرمان خودروزگار / آمدنی تخلیقی سرگرمیوں کے لئے اقلیتوں کو رِیایتی مال عطا کرنا ہے ۔ قَومی اقلیتی کمیشن کے قانون،1992 کے مُطابق ، فہرست شدہ اقلیتی مسلم ، عیسائی ، سکھ ، بُدھ اَور پارسی ہیں ۔ بعد میں ، جین طبقے کو بھی جنوری ، 2014 میں فہرست شدہ اقلیتی طبقات کی فہرست میں ڈالا گیا ہے ۔ فی الحال ، ایسے پریوار جِن کی آمدنی دیہاتی علاقے میں 81،000 روپے  سالانہ اَور شہری علاقوں میں 1،03،000 روپے سالانہ ہے ، وہ این ایم ڈی ایف سی کی اسکیموں کے تحت قرض لینے کے اہل ہیں ۔ این ایم ڈی ایف سی نے خاص پہل کرتے ہوئے ، حکومتِ حند کی دیگر پِچھڑے طبقے کے لئے اپنائی جا رہی " کریمی لےیر " صلاحیت کی تکمیل کرتے ہوئے سالانہ پاریوارِک آمدنی کی صلاحیت کی نئی حد 6.00 لاکھ رو۔ کر دی ہے ۔ یہ نئی صلاحیت قرض حد ستمبر ، 2014 سے لاگو ہے ۔

ہدف شدہ گروہوں  تَک پہُنچنے کے ذریعہ

ہدف شدہ گروہ  تَک پہُنچنے کے لئے این ایم ڈی ایف سی کے پاس درج ذیل دو ذریعہ ہیں :

    1. ریاست چینلائزِنگ ایجنسیاں (ایس سی اے)

    یہ قرض عطا کرنے کا خاص ذریعہ ہے ۔ ریاست چینلائزِنگ اجینسی ( ایس سی اے ) کو متعلقہ ریاستی سرکاروں کے ذریعے نامزد کیا جاتا ہے ۔ فی الحال ، این ایم ڈی ایف سی کی 37 چینلائزِنگ ایجنسیاں کام کر رہی ہیں اَور جِس کا بیورہ اس طرح ہے -

    • اقلیتی ترقی اَور مالی کارپوریشن نمبر 15
    • ریاست درج فہرست ذات / درج فہرست قبائلی لوگ ترقی کارپوریشن نمبر 4
    • ریاست پِچھڑا طبقہ ترقی کارپوریشن نمبر 8,/li>
    • ریاست خاتون ترقی کارپوریشن نمبر 3
    • ہتھ کرگھا اَور دستکاری کارپوریشن نمبر 2
    • دیگر ایجنسیاں ( مددگار بینکوں ، صنعتی ترقی کارپوریشن ، وغیرہ ) نمبر 5

    تمام نمبر 37 2. غیر سرکاری تنظیم (این جی او)

    ہدف شدہ گروہ تَک پہُنچنے کے لئے خود مدد گروہوں کے ذریعے منتخب غیر سرکاری تنظیمات ( این جی او ) کی خدمتیں لی جاتی ہیں ۔ اس طرح کے غیر سرکاری تنظیمات کو تین سال سے زیادہ پُرانا ، غیر سیاسی ، اقتصادی طور پر مضبوت اَور بچت اَور قرض میں کم سے کم ایک سال کے تجربہ کے ساتھ سماجِی اقتصادی سرگرمیوں کام کرنے والا ہونا چاہئے ۔

این ایم ڈی ایف سی کی قرض اسکیمیں ( کریڈِٹ لائن 1 )

میعادی قرض عمل ( ٹرم لون )

یہ عمل ذاتی مستفیدین کے لئے ہے ، جِس کو ریاست چینلائزِنگ اجینسی کے ذریعے لاگو کیا جاتا ہے ۔ ٹرم لون اسکیم میں 20.00 لاکھ روپے تَک کی خرچ والی منصوبہ بندی کے لئے قرض عطا کیا جاتا ہے ۔ این ایم ڈی ایف سی ، منصوبہ بندی خرچ کا 90 فیصدی تَک کا قرض عطا کرتی ہے ، جِس کی زیادہ سے زیادہ حد 18.00 لاکھ روپے ہے ۔ پرییوجنا کی باقی خرچ کو ریاست چینلائزِنگ اجینسی اَور مستفیدین کے ذریعے برداشت کیا جاتا ہے ۔ ہالانکہ ، مستفید کو منصوبہ خرچ کا کم سے کم 5 فیصدی لازمی طور سے دینا ہوتا ہے ۔ لابھارتھی سے لئے جانے والے سود کی در گھٹتے ہوئے باقی پر 6 فیصدی سالانہ ہے ۔


میعادی قرض اسکیم کے تابع کسی بھی قسم کے تِجارتی شکل سے قابِل عمل اَور تکنیکی نظر سے مُمکِن کاموں کے لئے قرض میسّر ہے ۔ اِن کاموں کو سہولت کے لئے درج ذیل علاقوں میں درجہ بند کیا گیا ہے -

  • کھیتی اَور اُس سے متعلق
  • تکنیکی کاروبار
  • چھوٹے کاروبار
  • کاریگر اَور روایتی کاروبار ، اَور
  • نقل و حمل اَور خدمتی علاقہ

سلسلہ وار نمبر

پیرامیٹرس

اسکیم کا بیورہ

1

قرض رقم

20.00 لاکھ روپئے تک

2

مستفیدین کے لئے سود در

6٪ سالانہ

3

ریاست چینلائزِنگ اجینسی کے لئے سود در

3٪ سالانہ

4

التوائے قرض ( مورےٹورِیم پیرِیڈ ) مہلت

6 ماہ

5

مستفیدین کے لئے باز ادائی کی مہلت

5 سال

6

ریاست چینلائزِنگ اجینسی کے لئے باز ادائی کی مہلت

8 سال

7

سرمایہ کاری کے ذریعہ

90 : 5 : 5

8

این ایم ڈی ایف سی: ایس سی اے: مستفید کا چندہ

3 ماہ

9

قرض استعمال کرنے کی مہلت

اسکیم کا بیورہ

یہ اسکیم ذاتی مستفیدیں کے لئے ہے اَور اِس کو ریاست چینلائزِنگ اجینسی کے ذریعے لاگو کیا جاتا ہے ۔ این ایم ڈی ایف سی ، اقلیتی طبقے کے اہل افراد کو روزگار سے متعلق تعلیم دینے کے مقصد سے تعلیمی قرض میسّر کراتی ہے ۔ اِس اسکیم کے تحت ، تکنیکی اَور تِجارتی نصاب کے لئے جوکہ 5 سال کی مہلت سے زیادہ کے نہ ہوں ، ہر سال 3.00 لاکھ روپئے۔ کی در سے زیادہ سے زیادہ 15.00 لاکھ روپئے۔ کا قرض میسّر ہے ۔ اس کے علاوہ ، غیرملکوں میں پڑھنے والے نصاب کے لئے جو کہ 5 سال کی مہلت سے زیادہ کے نہ ہوں ، ہر سال 4.00 لاکھ روپئے کی در سے زیادہ سے زیادہ 20.00 لاکھ روپئے کا قرض میسّر ہے ۔ اِس مقصد کے لئے ریاست چینلائزِنگ اجینسی کو 1 فیصدی کی سالانہ سود در پر فنڈ میسّر کرایا جاتی ہے ، جِس کو وہ آگے مستفیدین کو 3 فیصدی سالانہ سود کی شرح پر قرض میسّر کراتے ہیں ۔ نصاب پُورا ہونے کے بعد ، قرض کو زیادہ سے زیادہ پانچ سالوں میں واپس کرنا ہوتا ہے ۔

سلسلہ وار نمبر

پیرامیٹرس

اسکیم کا بیورہ

1

انتہائی قرض رقم

5 سال کی زیادہ سے زیادہ مدت کے ساتھ بھارت میں پیشہ اور روزگار سے متعلق ڈگری کورس 'کے لئے سالانہ 3.00 لاکھ روپئے کی شرح سے 15.00 لاکھ روپئے تک۔

5 سال کی زیادہ سے زیادہ مدت کے ساتھ 'بیرون ملک کورس' کے لئے سالانہ 4.00 لاکھ روپئے کی شرح سے 20.00 لاکھ روپئے تک۔

2

مستفیدین کے لئے سود کی شرح

3% سالانہ

3

ایس سی اے کے لئے سود کی شرح

1% سالانہ

4

قرض اِلتَوا مہلت ( مورٹورِیم پیرِیڈ )

نصاب پُورا ہونے کے 6 مہینے کے بعد یا نَوکری مِلنے کے بعد ، جو بھی پہلے ہو ۔

5

قرض اجازت کے لئے ایس سی اے کو تفویض شدہ حقوق



ریاست چینلائزِنگ اجینسی کو زمینی حقیقت کی بنیاد پر قرض کی اجازت / ادائگی کی صلاح دی گئی ہے ۔

6

مستفیدین کے لئے بازادائگی کی مہلت

5 سال

7

ریاستی چینلائزِنگ اجینسی کے لئے بازادائگی کی مہلت

5 سال

8

سرمایہ کاری کے ذریعہ

این ایم ڈی ایف سی : ایس سی اے : مستفید کا چندہ

90 : 5 : 5

مختصر سرمایہ کاری اسکیم

مختصر سرمایہ کاری اسکیم کے تحت ، خود مدد گروہوں ( ایس ایچ جی ) کے ممبروں کو بالخصوص ، دور دراز کے گاؤں اَور شہروں کی غلیظ بستیوں میں گُزر بسر کر رہی اقلیتی طبقے کی اُن خواتین کو مختصر قرض دیا جاتا ہے جو نہ تو بینکوں سے قرض لے پاتی ہیں اَور نہ ہی ریاست چینلائزِنگ اجینسی کے ذریعے این ایم ڈی ایف سی کی قرض عمل کا نفع ہی اُٹھا پاتی ہیں ۔ این ایم ڈی ایف سی اِس اسکیم کو بنگلہ دیش کے دیہاتی بینک اَور قَومی خاتون لغت ( آر ایم کے ) کی طرز پر نافذ کر رہی ہے ۔ اِس اسکیم میں یہ توقع کی جاتی ہے کہ مستفید پہلے تو خود مدد گروہوں کو بنائے ۔ اُس کے بعد باقاعدہ بچت کرنے کی عادت بنائیں ، چاہے یہ بچت چھوٹِی ہی کیوں نہ ہو ۔

اِس اسکیم میں خود مدد گروہوں ( ایس ایچ جی ) کے نیٹورک اَور ایس سی اے کے ذریعے پہچان کئے قرض معاملے میں قابِل اعتماد غیر سرکاری تنظیمات کے ذریعے بھی انتہائی غریب لوگوں کو قرض دینے کی تصور ہے ۔ یہ ایک غیر رسمی قرض اسکیم ہے ، جِس میں مستفید کے دروازے پر جلد قرض پیشکش مقررہ کی جاتی ہے ۔ اِس عمل کے تحت این جی او / خود مدد گروہ کے ذریعے ایس ایچ جی کے ہرایک ممبر کو ادھِکتم 1.00 لاکھ روپئے تَک کا مختصر قرض عطا کیا جاتا ہے ۔ اِس عمل کو ایس سی اے کے ساتھ ساتھ این جی او کے ذریعے بھی لاگو کیا جاتا ہے ۔ این جی او / ایس سی او کو 1 فیصدی کی در پر دیا جاتا ہے جِس کو وہ آگے ایس ایچ جی کو 7 فیصدی سالانہ کی سود در پر مہیّا کراتے ہیں ۔ اِس عمل کے تحت قرض واپس کرنے کی زیادہ سے زیادہ مہلت 36 مہینے ہے ۔

سلسلہ وار نمبر

پیرامیٹرس

اسکیم کی تفصیل

1

قرض رقم

خود مدد گروہ کے ہرایک ممبر کے لئے 1.00 لاکھ روپئے تَک

2

ریاست چینلائزِنگ اجینسی کے لئے سود شرح

1% سالانہ

3

ریاست چینلائزِنگ ایجنسیوں کے ذریعے غیر سرکاری تنظیموں کے لئے سود شرح

2٪ سالانہ (ریاستی چینیلائزنگ ایجنسی کے لئے 1٪ سالانہ کا مارجِن)

4

غیر سرکاری تنظیموں کے ذریعے خود مدد گروہوں کے لئے سود شرح

7٪ سالانہ(غیر سرکاری تنظیموں کے لئے 5٪ سالانہ کا مارجِن)

5

ریاستی چینلائزِنگ ایجنسی کے ذریعے خود مدد گروہوں کے لئے سود شرح

7٪ سالانہ(ریاست چینیلائزنگ ایجنسی کے لئے 6٪ سالانہ کا مارجِن)

6

مستفیدین / خود مدد گروہوں کے لئے سود شرح

7% سالانہ

7

سیدھے این ایم ڈی ایف سی کے ذریعے غیر سرکاری تنظیموں کے لئے سود شرح

1٪ سالانہ(غیر سرکاری تنظیموں کے لئے 6٪ سالانہ کا ماررجِن)

8

قرض ستھگن مہلت ( مورٹورِیم پیرِیڈ )

3 مہینے

9

غیر سرکاری تنظیمات / فیڈریشن کو قرض منظوری کے لئے ایس سی اے کے پاس حق

ہر ایک غیر سرکاری تنظیم / فیڈریشن کے لئے 25.00 لاکھ روپئےکی حد ۔

10

مستفیدین کے لئے بازادائی کی مہلت

3 سال

11

ریاستی چینلائزِنگ ایجنسی / غیر سرکاری تنظیمات کے لئے باز ادائی کی مہلت

4 سال / 3 سال

12

ریاستی چینلائزِنگ ایجنسی / غیر سرکاری تنظیمات کے لئے استعمال مہلت

3 مہینے / 1مہینے

13

سرمایہ کاری کے ذرائع

این ایم ڈی ایف سی ایس سی اے : مستفید کا تعاون

 

90 : 5 : 5

خاتون خوشحالی اسکیم

خاتون خوشحالی عمل ایک اَنُوٹھی عمل ہے ، جِس میں خود مدد گروہوں میں قائم خاتون ممبروں کو سیلائی ، کٹِنگ اَور کڑھائی وغیرہ کاروبار میں تربیت دینے کے ساتھ ساتھ مختصر قرض دیا جاتا ہے ۔ اِس عمل کو این ایم ڈی ایف سی کی ریاست چینلائزِنگ اجینسی ( ایس سی اے ) کے ساتھ ساتھ وابستہ ایس سی اے کے ذریعے پہچان کئے گئے غیر سرکاری تنظیمات کے ذریعے نافذ کی جا رہی ہے ۔ خاتون خوشحالی عمل کے تحت ، خواتین کے مطابق کِسی مناسب دستکاری سرگرمی میں لگ بھگ 20 خواتین کے گروہ کو تربیت عطا کی جاتی ہے ۔ تربیت کے دوران ہی خود مدد گروہ کی تشکیل کر دی جاتی ہے ۔ تربیت کے بعد بنے خود مدد گروہ کے ممبروں کو مختصر قرض میسّر کرایا جاتا ہے ۔ تربیت کی آخری مہلت چھے مہینے ہے اَور تربیت خرچ کی آخری حد فی زیرتربیت ہر مہینے 1،500 رو۔ ہے ۔ تربیت کے دوران زیرتربیت کو ہر مہینے 1،000 رو۔ کا وظیفہ بھی دیا جاتا ہے ۔ این ایم ڈی ایف سی کے ذریعے چندے کی شکل میں تربیت خرچ اَور وظیفہ کی ادائگی کی جاتی ہے ۔ تربیت کے بعد ، بنائے گئے خود مدد گروہ کے ہر ممبر کو اُن کی ضرورت کی بنیاد پر 7 فیصدی سالانہ سود در پر زیادہ سے زیادہ 1.00 لاکھ روپئے کا قرض میسّر ہے ۔

این ایم ڈی ایف سی کی قرض اسکیمیں ( کریڈِٹ لائن 2 )

این ایم ڈی ایف سی کی بُلند مقدار کے قرض اَور سود دروں والی سرمایہ کاری اسکیم کے بیورے نیچے پیش ہیں -

میعادی قرض ( ٹرم لون ) اسکیم

یہ اسکیم ذاتی مستفیدین کے لئے ہے اَور اِس اسکیم کو ریاستی چینلائزِنگ اجینسی کے ذریعے نافذ کی جاتی ہے ۔ میعادی قرض عمل میں 30.00 لاکھ روپئے تَک کی لاگت والی منصوبہ بندی کے لئے قرض عطا کیا جاتا ہے ۔ این ایم ڈی ایف سی کے ذریعے پرییوجنا خرچ کا 90 فیصدی تَک کا قرض عطا کیا جاتا ہے ، جِس کی ادھِکتم حد 27.00 لاکھ روپئے ہے ۔ پرییوجنا کی باقی لاگت کو ریاست چینلائزِنگ اجینسی اَور مستفید کے ذریعے دیا جاتا ہے ۔ حالانکہ ، مستفید کو منصوبہ بندی لاگت کا کم سے کم 5 فیصدی لازمی طور سے دینا ہوتا ہے ۔ مرد مستفیدیں سے 8 فیصدی سالانہ اَور خاتون مستفیدیں سے 6 فیصدی سالانہ کا سود لیا جاتا ہے ۔

سلسلہ وار نمبر

پیرامیٹرس

 

اسکیم کا بیورہ

1

قرض رقم

20.00 لاکھ روپئے تک

2

مستفیدیں کے لئے سود کی شرح

6% سالانہ

 

3

ریاست چینلائزِنگ اجینسی کے لئے سود کی شرح

3% سالانہ

4

التوائے قرض ( مورےٹورِیم پیرِیڈ ) مہلت

6 ماہ

5

مستفیدین کے لئے باز ادائگی کی مہلت

5 سال

6

ریاست چینلائزِنگ اجینسی کے لئے باز ادائگی کی مہلت

8 سال

7

سرمایہ کاری کے ذریعہ

این ایم ڈی ایف سی: ایس سی اے: مستفید کا چندہ

90 : 5 : 5

8

قرض استعمال کرنے کی مہلت

3 ماہ

تعلیمی قرض اسکیم

یہ اسکیم بھی ذاتی مستفیدیں کے لئے ہے اَور اِس اسکیم کو ریاستی چینلائزِنگ ایجنسی کے ذریعے نافذ کیا جاتا ہے ۔ اقلیتی طبقہ کے لائق آدمیؤں کو روزگار سے متعلق تعلیم دینے کے لئے این ایم ڈی ایف سی کے ذریعے تعلیمی قرض عطا کیا جاتا ہے ۔ اِس اسکیم کے تابع ' تکنیکی اور تِجارتی نصاب ' کے لئے جو کہ 5 سال کی مہلت سے زیادہ کے نہ ہوں ، ہر سال 4.00 لاکھ روپئے کی در سے زیادہ سے زیادہ 20.00 لاکھ روپئے کا قرض میسّر ہے ۔ اس کے علاوہ ، بیرون ممالک میں نصاب کے لئے جوکہ 5 سال کی مہلت سے زیادہ کے نہ ہوں ، ہر سال 6.00 لاکھ روپئے کی در سے زیادہ سے زیادہ 30.00 لاکھ روپئے کا قرض میسّر ہے ۔ اِس مقصد کے لئے ریاستی چینلائزِنگ اجینسی کو 2 فیصدی کی سالانہ سود در پر فنڈ میسّر کرائی جاتی ہے ، جِسے وہ آگے مرد مستفیدین کو ہر سال 8 فیصدی اَور خاتون مستفیدین کو ہر سال 5 فیصدی کی سود در پر قرض میسّر کراتے ہیں ۔ نصاب پُورا ہونے کے بعد ، قرض کو ادھِکتم پانچ سالوں میں واپس کرنا ہوتا ہے ۔

سلسلہ وار نمبر

پیرامیٹرس

 

اسکیم کا بیورہ

1

انتہائی قرض رقم

 

 

5 سال کی زیادہ سے زیادہ مدت کے ساتھ بھارت میں 'پیشہ ورانہ اور روزگار سے متعلق ڈگری کورس' کے لئے سالانہ 4.00 لاکھ روپئے کی شرح سے 20.00 لاکھ روپئے تک۔

5 سال کی زیادہ سے زیادہ مدت کے ساتھ 'بیرون ملک کورس' کے لئے سالانہ 6.00 لاکھ روپئے کی شرح سے 30.00 لاکھ روپئے تک۔

2

مستفیدین کے لئے سود کی شرح

مرد مستفیدین کے لئے اَور خاتون مستفیدین کے لئے

8% سالانہ اور 5% سالانہ

3

ایس سی اے کے لئے سود کی شرح

2% سالانہ

4

التوائے قرض کی مہلت ( مورٹورِیم پیرِیڈ )

نصاب پُورا ہونے کے 6 مہینے کے بعد یا نَوکری مِلنے کے بعد ، جو بھی پہلے ہو ۔

5

قرض کی منظوری کے لئے ایس سی اے کو  تفويضی قبضہ

 

ریاست چینلائزِنگ اجینسیوں کو زمینی حقیقت کے بنیاد پر قرض کی اجازت / ادائگی کی صلاح دی گئی ہے ۔

6

مستفیدین کے لئے بازادائیگی کی مہلت

5 سال

 

 

7

ریاست چینلائزِنگ اجینسی کے لئے بازادائیگی کی مہلت

5 سال

8

سرمایہ کاری کے ذریعہ

این ایم ڈی ایف سیایس سی اے : مستفید کا چندہ

90 : 5 : 5

مختصر سرمایہ کاری اسکیم

اِس اسکیم کے تحت ، ریاستی چینلائزِنگ اجینسیوں / غیر سرکاری تنظیمات اَور خود مدد گروہوں ( ایس ایچ جی ) کے نیٹورک کے ذریعے سب سے زیادہ غریب آدمیوں کو مختصر قرض دیا جاتا ہے ۔ یہ ایک غیر رسمی قرض اسکیم ہے جِس میں مستفید کے دروازے پر جلد قرض ادائیگی مقرر کی جاتی ہے ۔ اِس اسکیم میں ایس سی اے / غیر سرکاری تنظیمات / خود مدد گروہوں کے ذریعے خود مدد گروہ کے ہر ممبر کو زیادہ سے زیادہ 1.50 لاکھ روپئے تک کے چھوٹے چھوٹے قرض دئے جاتے ہیں ۔ ریاستی چینلائزِنگ اجینسی ، اَور ایس سی اے کے ذریعے پہچان کئے گئے غیر سرکاری تنظیمات اَور خود مدد گروہوں ( ایس ایچ جی ) کے نیٹورک کے ذریعے 20 خواتین کے گروہ کو ادھِکتم 30.00 لاکھ روپئے کا قرض دیا جاتا ہے ۔ یہ رقم ریاستی چینلائزِنگ اجینسی / غیر سرکاری تنظیمات کو دی جاتی ہے ، جِس کو آگے یہ قرض خود مدد گروہ کو میسّر کرایا جاتا ہے ۔ اِس اسکیم کے تحت مرد مستفیدین کو ہر سال 10 فیصدی سود در پر اَور خاتون مستفیدین کو ہر سال 8 فیصدی سود کی در پر قرض دیا جاتا ہے ۔

سلسلہ وار نمبر

پیرامیٹرس

 

اسکیم کا بیورہ

1

قرض رقم

 

خود مدد گروہ کے ہر ممبر کے لئے زیادہ سے زیادہ 1.50 لاکھ روپئے تَک خود مدد گروہ کے ایک گروہ کی 20 خواتین کو زیادہ سے زیادہ 30.00 لاکھ رو۔ تَک کا قرض

2

ریاستی چینلائزِنگ اجینسی کے لئے سود در

مرد مستفیدین کے لئے 4 % سالانہ اَور خاتون مستفیدین کے لئے 2 % سالانہ

3

ریاستی چینلائزِنگ اجینسی کے ذریعے غیر سرکاری تنظیمات کے لئے سود کی شرح

مرد مستفیدین کے لئے 5 % سالانہ ( ریاستی چینلائزِنگ اجینسی کے لئے 1 % سالانہ کا حاشیہ ) اَور خاتون مستفیدین کے لئے 3 % سالانہ ( ریاستی چینلائزِنگ اجینسی کے لئے 1 % سالانہ کا حاشیہ )

4

غیر سرکاری تنظیمات کے ذریعے خود مدد گروہوں کے لئے سود کی شرح

مرد مستفیدین کے لئے 10 % سالانہ ( این جی او کے لئے 5 % سالانہ کا حاشیہ ) اَور خاتون مستفیدین کےلِۓ 8 % سالانہ ( این جی او کے لئے 5 % سالانہ کا حاشیہ )

5

ریاستی چینلائزِنگ اجینسی کے ذریعے خود مدد گروہوں کے لئے سود کی شرح

مرد مستفیدین کے لئے 10 % سالانہ ( ایس سی اے کے لئے 6 % سالانہ کا حاشیہ ) اَور خاتون مستفیدین کےلِۓ 8 % سالانہ ( ایس سی اے کے لئے 4 % سالانہ کا حاشیہ )

6

مستفیدین / خود مدد گروہوں کے لئے سود کی شرح

مرد مستفیدین کے لئے 10 % سالانہ اَور خاتون مستفیدین کے لئے 8 % سالانہ

7

سیدھے این ایم ڈی ایف سی کے ذریعے غیر سرکاری تنظیمات کے لئے سود کی شرح

مرد مستفیدین کے لئے 4 % سالانہ ( این جی او کے لئے 6 % سالانہ کا حاشیہ ) اَور خاتون مستفیدین کے لِئے 2 % سالانہ ( این جی او کے لئے 6 % سالانہ کا حاشیہ )

8

التوائے قرض کی مہلت ( مورٹورِیم پیرِیڈ )

3 ماہ

9

غیر سرکاری تنظیمات / فیڈریشن کو قرض منظوری کے لئے ایس سی اے کے پاس حقوق

ہر ایک غیر سرکاری تنظیم / فیڈریشن کے لئے 25.00 لاکھ روپئے کی حد ۔

10

مستفیدین کے لئے بازادائیگی کی مہلت

3 سال

11

ریاستی چینلائزِنگ ایجنسی / غیر سرکاری تنظیموں کے لئے بازادائی کی مہلت

4 سال / 3 سال

12

ریاستی چینلائزِنگ ایجنسی / غیر سرکاری تنظیموں کے لئے استعمال کی مہلت

3 مہینے /1 مہینے

13

سرمایہ کاری کے ذریعہ

این ایم ڈی ایف سیایس سی اے : مستفید کا چندہ

90 : 5 : 5

ترقیاتی اسکیمیں

فنِ ترقی

یہ پروگرام آپ کے کارپوریشن کے ذریعے تاریخ 11 نومبر ، 2014 کو خاص مقصد ذریعہ ( ایس پی وی ) کے طور پر قائم  مانس کے ذریعے نافذ کیا جا رہا ہے ۔ مانس کی تنصیب کا مقصد اقلیتی برادری کے مہارت کی ترقی اَور اُن کو اپگریڈ کرنے  کی تمام قسم کی ضروریات کو پُورا کرنا ہے ۔ مانس بنیادی طور پر اِس علاقے میں کام کر رہے قَومی فنِ ترقی ( این ایس ڈی سی ) اَور اُس کے شراکت داروں اَور سرکاری ، نصف سرکاری ایجنسیوں اَور بڑے پیمانے پر دیگر معزز ذاتی ایجنسیوں کے ساتھ الحاق کے طور پر کام کرے‌گا ۔

شروع میں 26 سیکٹر مہارتی کونسلوں اَور دیگر معلومات رکھنے والے ؛ شراکت داروں کے نصابوں کو اپنایا جائے‌گا جِن کے پاس قَومی تِجارتی تعلیم معیار ( این او ایس ) / قَومی تِجارتی تعلیم قابل طریقہ کار ( این وی اِی کیو ایف ) کے مُطابق نصاب ہوں‌گے ۔ انسان کے ذریعے پلیسمنٹ متعین کرنے کے لئے موثر  مزدور قوت کے حقیقی آجروں کے ساتھ مِل‌کر ، اُن کی ضرورت کے مُطابق ، نصاب تیار کئے جائیں‌گے ۔ فنِ تربیت کے لئے جو آدمی کے ساتھ گٹھ جوڑ کریں‌گے اُن کو ، معیارات کے مُطابق ، این ایس ڈی سی شراکت داروں اَور دیگر بڑے پیمانے پر تِجارتی تربیتی فراہم کنندگان کے ذریعے تربیتی سہولیات اَور بنیادی ڈھانچہ فراہم کیا جائے‌گا ۔ تربیت کی صلاحیت اَور دئے گئے تربیت کی خوبی یقین دہانی کو متعین کرنے کے لئے اپنے متعلقہ علاقوں میں ، قابل قبول اَور تسلیم اَور سرٹیفکیشن باڈیز / بيش رَس اداروں ، سیکٹر مہارتی کونسلوں کے ساتھ انسان کے ذریعے مشترکہ طور پر سرٹیفکیشن کا کام کیا جا سکتا ہے ۔

این ایس ڈی سی شراکت داروں / مانس کی تربیتی شراکت داروں کے ذریعے مزدوری روزگار کی پلیسمنٹ کو متعین کیا جائے‌گا ۔ مانس کے ذریعے این ایم ڈی ایف سی کے قرض سے تربیتی شراکت داروں کے ذریعے خود روزگار  متعین کیا جائے‌گا ۔ فنِ ترقی / مہارتی ارتفاع کے ذریعے قرض کی ادائیگی اَور خود روزگار پیداوار کے درمیان کی کڑی کو جوڑنے کے مقصد کے لئے انسان کی شراکت داری اَور خود انسان ، این ایم اے ڈی ایف سی کی چینلائزِنگ ایجنسی بن جائیں‌گے ۔ غیر ملکی پلیسمنٹ کو مُہاجر ہندوستانی معاملات کے  وزرات کے ذریعے اَور ملک کے اندر کے پلیسمنٹ کو دیگر سرکاری محکموں / ایجنسی کے ذریعے کیا جائے‌گا ۔ امیدواروں کی نگرانی ، دیکھ بھال اَور اُن پر نگاہ رکھنے کا کام مانس / تربیتی شراکت داروں وغیرہ کے ذریعے کیا جائے‌گا ۔ مانس کے ذریعے این ایم ڈی ایف سی کے ڈاٹا سنٹر کا استعمال کیا جائے‌گا ۔


فنِ ترقی پروگرام کے تحت 350 سے زیادہ امیدواروں کے لئے 35.00 لاکھ روپئے کی کُل رقم جاری کی جا چُکی ہے جِس کا بیورا اس طرح ہے :

 

 

 

رقم کروڑ روپئے  میں

سلسلہ وار نمبر

ادارے کا نام

 

کُل امیدوار

 

کُل رقم

1

ٹی ایس اسکِل اینڈ ٹیک پرائویٹ لمیٹڈ۔

150

 

0.15

2

اسکِل ٹری کنسلٹِنگ ( پرائویٹ ) لمیٹڈ۔

200

 

0.20

 

کُل

350

0.35

تِجارتی تربیتی اسکیم

این ایم ڈی ایف سی کی تِجارتی تربیتی اسکیم کا مقصد زیر ہدف انفرادی مستفیدین کو خود روزگار / روزگار کے لئے مہارت فراہم کرنا ہے ۔ اِس اسکیم کو ریاست چینلائزِنگ ایجنسیوں کے ذریعے لاگو کیا جاتا ہے ، جو اپنی ریاستوں میں مقامی سرکاری / تسلیم شدہ تربیتی اداروں کی مدد سے خود روزگار / روزگار پر مبنی کاروباروں  میں ضرورت کی  بنیاد پر تربیتی  پروگراموں کا انعقاد کرتے ہیں ۔ زیادہ سے زیادہ چھے مہینے تَک کی مہلت والے نصابوں کے لئے تربیتی پروگرام کی خرچ فی امیدوار ہر مہینے 2،000 روپئے ہے ۔ تربیت کے دوران ہرایک زیرتربیت ( ٹرینِیوں ) کو ہر مہینے 1،000 روپئے کی شرح سے وظیفہ بھی دیا جاتا ہے ۔ اسکیم کے مُطابق ، این ایم ڈی ایف سی کے ذریعے تربیتی خرچ کا 90 فیصدی تعاون کے طور پر دیا جاتا ہے اَور باقی کا 10 فیصدی ریاست چینلائزِنگ ایجنسی / تربیتی ادارے کے ذریعے دیا جاتا ہے ۔ ریاستی چینلائزِنگ ایجنسی / تربیتی ادارے کو روزگار / خود روزگار میں کم از کم 80 فیصدی زیرتربیت ( ٹرینِیوں ) کی پلیسمنٹ متعین کرنی ہوگی اَور جِس میں سے 50 فیصدی کو مُتَّحِد علاقے میں تقرری کرنی ہوگی ۔ تربیت کے بعد زیرتربیت ( ٹرینِیوں ) کو 1 سال تَک ہینڈ ہولڈِنگ مدد بھی فراہم کرنا ہوگا ۔


ریاست چینلائزِنگ ایجنسی کے لئے فنڈز کی منظوری / جاری کرنے کے لئے مقررہ فارموں میں اپنے تجاویز این ایم ڈی ایف سی کو پیش کرنا ضروری ہوگا ۔

سلسلہ وار نمبر۔

پیرامیٹرس

 

اسکیم کا  بیورہ

1

تربیتی لاگت

فی مہینہ فی زیرتربیت 2،000 / روپئے۔

2

تربیت کی مہلت

6 مہینے تک

3

وظیفہ

فی مہینہ فی زیرتربیت 1،000 / روپئے۔

4

سرمایہ کاری کے ذرائع

این ایم ڈی ایف سی: ایس سی اے / این جی او

90 فیصد : 10 فیصد

کاروبار ( مارکیٹنگ ) مدد اسکیم

کاروبار ( مارکیٹنگ ) مدد اسکیم ذاتی کاریگروں ، این ایم ڈی ایف سی کے مستفیدین کے ساتھ ساتھ خود مدد گروہوں کے لئے ہے اَور اِس اسکیم کو ریاستی چینلائزِنگ ایجنسی کے ذریعے نافذ کیا جاتا ہے ۔ اِس کا مقصد کاریگروں کو مدد دینا ، اُن کی مصنوعات کی مارکیٹنگ کرنا اَور اُن کو اُس کی فائدہ مند قیمت دِلانا ہے ۔ اِس کے لِئے اُن کی فروخت کو بڑھاوا دینے کے لئے ، این ایم ڈی ایف سی کے ذریعے چُنِندہ جگہوں پر ریاست / ضلع سطح پر نمائش منظم کرنے میں ریاستی چینلائزِنگ اجینسیوں اَور غیر سرکاری تنظیموں کی مدد کی جاتی ہے ۔ اِن نمائشوں میں اقلیتی طبقے کے کاریگروں کے ہتھکرگھا / دستکاری مصنوعات کا مظاہرہ کیا جاتا ہے اَور اُن کی فروخت کی جاتی ہے ۔ اس طرح کی نمائشیں ' خریددار فروخت کنندہ اجتماع ' سے آپسی میل جول کو بڑھانے میں مددگار ہوتی ہیں ، جو گھریلو خرچ اَور برآمد کے لئے مارکیٹنگ کو بڑھاوا دینے اَور مصنوعات کی ترقی کا کارگر ذریعہ ہے ۔ تجاویز کی تشخیص کرنے کے بعد اسکیم کے سمت ہدایتوں کے مُطابق ، این ایم ڈی ایف سی کے ذریعے نمائشوں کے منظم کے لئے تعاون میسّر کرایا جاتا ہے ۔ Table

امدادی تعاون اسکیم

این ایم ڈی ایف سی کی اسکیمیں کے موثر نفاذ کے لئے این ایم ڈی ایف سی کی ایس سی اے کی بنیادی ڈھانچے کو مضبوت کرنے کے لئے وزارت اقلیتی امور کے ذریعے امدادی تعاون ( جی آئی اے ) اسکیم کے تحت مدد کی جاتی ہے ۔ اب تک ، این ایم ڈی ایف سی کے ذریعے مختلف ایس سی اے کو 17.14 کروڑ روپئے کی رقم جاری کی جا چُکی ہے ۔


قومی اقلیتی ترقی  اَور مالیاتی کارپوریشن  ( این ایم ڈی ایف سی ) سے منسلک سوال و جواب  کے لئے اِس لِنک میں کلِک کریں

2.625
اپنی تجاویز ارسال کریں (اگر مذکورہ بالا مواد پر آپ کو کوئی تبصرہ/تجویز دینی ہو تو براہ کرم یہاں درج کریں))
Enter the word
Back to top