ہوم / صحت / صحتی منصوبے / پردھان منتری سُرکشت ماترِتْو ابھیان( پی ایم ایس ایم اے )
شیئر
Views
  • صوبہ Open for Edit

پردھان منتری سُرکشت ماترِتْو ابھیان( پی ایم ایس ایم اے )

اِس صفحہ میں پردھان منتری سُرکشت ماترِتْو ابھیان ( پی ایم ایس ایم اے ) کی معلومات دی گئی ہے

کردار

حاملہ خواتین کے لئے نو جون کو ایک نئی صحتی اسکیم  پردھان منتری سُرکشت ماترتْو ابھیان ( پی ایم ایس ایم اے ) شروع کی ہے۔اِس صحتی اسکیم کی مدد سے ماں اَور شیرخوار بچّے کی شرح اموات  کو کم کیا جا سکتا ہے۔وزارت صحت اور خاندانی بہبود کی رپورٹ کے مطابق،ہزار سالہ ترقی ہدف ( ایم ڈی جی ) 5 کے تحت،ہندوستان میں 1990 کی 560 فی ایک لاکھ زچگی موت کی شرح ( ایم ایم آر ) کو نیچے لاتے ہوئے 2015 میں 140 فی 1،00،000 تَک لانے کا ہدف تھا۔یونیسیف کے مطابق،55،000 سے زیادہ حاملہ خواتین ولادت کے وقت اپنی جان گنوا دیتی ہیں۔اِسے وقت۔وقت پر میڈیکل فالو۔اپ اَور جانچ‌ کے ذریعے روکا جا سکتا ہے۔یہ سرکار کے تشویشناک ہونے کے ساتھ ہی برتری کا معاملہ ہے۔اِس بات کی تصدیق مرکزی حکومت کی طرف سے حاملہ خواتین کی ضروریات کے مطابق شروع کئے گئے چند منصوبوں کے ذریعے ہوتی ہے۔

مہم کے زیر ہدف مُسْتَفِید

یہ پروگرام اُن تمام حاملہ خواتین کو زیر ہدف کرتا ہے جو حالتِ حمل کے 2 اَور 3 ٹرائمیسٹر میں ہیں۔پی ایم ایس ایم اے منصوبہ کے تحت،تمام سرکاری ہسپتال اَور صحتی مرکز ہر مہینے کی نو تاریخ کو تمام حاملہ خواتین کی مفت طبی جانچ کریں‌گے۔

پی ایم ایس ایم اے پروگرام کے تحت دستیاب عوامی صحتی سہولیات

دیہی علاقوں میں

  • ابتدائی صحتی مرکز،کمیونٹی صحتی مرکز،دیہی ہسپتالوں،ذیلی۔ضلع ہسپتال،ضلع ہسپتال،میڈیکل کالج ہسپتال

شہری علاقوں میں

  • شہری دواخانہ،شہری صحتی پوسٹ،زَچْگی گھر

پردھان منتری سُرکشت ماترِتْو ابھیان( پی ایم ایس ایم اے ) کا مقصد

عام طور پر،جب ایک خاتون حاملہ ہوتی ہے تو وہ مختلف قسم کی بیماریوں جیسے بلڈپریشر،شوگر اَور ہارمونل بیماریوں میں مبتلا ہو جاتی ہیں۔اِس منصوبہ کے تحت حاملہ خواتین کے لئے اَچھی صحت اَور آزادانہ جانچ فراہم کرنے کے ساتھ صحت مند بچّے کو جنم دینے کی کوشش ہے۔

  • حاملہ خواتین کے لئے ایک صحت مند زندگی فراہم کی جائے‌گی ۔
  • مادریت کی شرح اموات کو کم کیا جائے‌گا ۔
  • حاملہ خواتین کو اُن کی صحت کے مدعوں/بیماریوں کے بارے میں بیدار کیا جائے‌گا۔
  • بچّے کی صحت مند زندگی اَور سیف ڈلیوری کو متعین کیا جائے‌گا۔
  • پردھان منتری سُرکشت ماترِتْو ابھیان کی اہم خصوصیات -
  • یہ منصوبہ صرف حاملہ خواتین کے لئے لاگو ہے ۔
  • ہر مہینے کی 9 تاریخ کو مفت صحت کی جانچ ہوگی۔
  • اِس منصوبہ کے تحت تمام قسم کی طبی جانچ پوری طرح سے مفت ہیں ۔
  • ٹیسٹ طبی مراکز ، سرکاری اَور ذاتی ہسپتالوں اَور ملک بھر‌کے ذاتی کلینک میں لئے جائیں‌گے ۔
  • خواتین کو اُن کے صحتی مسائل کی بنیاد پر الگ شناختہ  کیا جائے‌گا جِس سے ڈاکٹر آسانی سے مسئلہ کا پتہ لگا سکتے ہیں۔

حکومت ہند نے اِس منصوبہ کے تحت حاملہ خواتین کو تمام قسم کی طبی مدد مفت فراہم کرنے کا فیصلہ کیا ہے

پردھان منتری سُرکشت ماترِتْو ابھیان کے لئے استحقاق

  • یہ منصوبہ صرف حاملہ خواتین کے لئے لاگو ہے ۔
  • منصوبہ اُن خواتین کے لئے ہے جو شہری علاقوں یا نصف۔ شہری علاقوں سے نہیں ہیں ۔
  • دیہی علاقوں سے حاملہ ماؤں کو اِس مفت صحتی دیکھ بھال کا فائدہ حاصل کرنے کے لئے متاثر کیا جائے‌گا۔
  • حالت حمل کے 3 سے 6 مہینے میں خواتین اِس پردھان منتری سُرکشت ماترِتْو ابھیان  ( پی ایم ایس ایم اے ) کا فائدہ لینے کے لئے اہل ہوں‌گی۔

پی ایم ایس ایم اے پروگرام کے تحت دستیاب خدمات

  1. پردھان منتری سرکشت ماترِتْو ابھیان (پی ایم ایس ایم اے) کے تحت سہولت اور خدمت کے لئے آنے والے مستفیدین  رجسٹریشن کے لیے الگ رجسٹر ہوگا۔
  2. رجسٹریشن کے بعد،اے این ایم اور ایس این یہ متعین کرتا ہے کہ مستفید ماہر خاتوں/میڈیکل آفیسر کی طرف سے جانچ سابق تمام بنیادی لیبارٹری جانچ ہو چکی ہیں۔جانچ کی رپورٹ ڈاکٹروں کو مستفیدین کے ملنے کے وقت سے ایک گھنٹے کے پہلے سونپ دیا جانا چاہئے۔اس ٹیسٹ سے وقت میں تشویش ناک حالت (اینمیا،دوران حمل ذیابیطس،ہائی بلڈ پریشر،انفیکشن وغیرہ) کی شناخت کو متعین کرےگا اور مناسب مشورہ ممکن ہوگا۔
  3. بعض حالات میں،جہاں اضافی جانچ کی ضرورت ہیں اس میں مستفیدین کو جانچ کی صلاح دی جاتی ہے اور پردھان منتری سُرکشت ماترِتْو ابھیان کے تحت اگلے اے این سی جانچ یا روٹین جانچ  کے دوران رپورٹ ساجھا کرنے کے لئے صلاح  دی جاتی ہے۔
  4. لیب جانچ - یو ایس جی، اور تمام بنیادی جانچ - ایچ بی، پیشاب ایلبيومن، آربی ایس (ڈِپ اسٹِک)، ریپِڈ ملیریا ٹیسٹ، ریپِڈ وي ڈي ار ایل ٹیسٹ، بلڈ گروپ، سی بی سی اِی ایس آر، یو ایس جی وغیرہ۔

پردھان منتری سُرکشت ماترِتْو ابھیان ( پی ایم ایس ایم اے ) کے تحت درج ذیل مخصوص خدمات کو فراہم کیا جائے‌گا اس طرح ہیں -

  1. تمام مستفیدین کی ایک تفصيلی تاریخ لی جانی ہے اور ٹیسٹنگ اور تشخیص کسی بھی خطرے کا اشارہ،پیچیدگیوں یا کسی تشویش ناک صورت حال کو جاننے کے لئے ضروری ہے۔
  2. اے این سی جانچ  کے دوران فی مستفید بلڈ پریشر،پیٹ کی جانچ  اور جنین کے دل کی آواز کی جانچ کی جانی چاہئے۔
  3. اگر عوامی صحت کی سہولت کے لئے آئی خواتین کو اگر کسی مخصوص جانچ کی ضرورت ہے،تو جانچ  کے لئے نمونہ لے کر اور ٹیسٹ کے لئے مناسب مرکز تک لے جایا جانا ضروری ہے۔اے این ایم/ایم پی ڈبلیو کو جمع نمونہ کو جانچ کے لئے بھیجنے اور حاملہ خواتین تک نتائج کو بتانے اور ضروری فالو اپ کے لئے ذمہ دار ہونا چاہئے۔
  4. پردھان منتری سُرکشت ماترِتْو ابھیان (پی ایم ایس ایم اے) کے تحت اے این ایم / اسٹاف نرس کے ذریعے جانچ کے بعد میڈیکل آفیسر کی طرف سے بھی سبھی آئے ہوئے مستفیدین کی جانچ  کرنی چاہئے۔
  5. تمام شناختہ تشویش ناک حاملہ خواتین کو اعلیٰ سہولیات کے لئے ریفر کرنا ہے اور جے ایس ایس کے (جنني شیشو سُرکشا کاریہ کرم) مدد ڈیسک جو ان سہولیات کو مہیا کرانے کے لئے قائم کیا گیا ہے وہ خواتین کو ان سہولیات تک پہنچنے کے لئے ذمہ داری لیں گے۔ ایم سی پی کارڈ تمام مستفیدین کو جاری کیا جائے گا۔
  6. سبھی ہائی جوکھم (پیچیدگیوں سمیت) کے تحت شناختہ کی گئی  خواتین کو ماہر قبالت اور امراض نسواں/ کامپریہینسیو امرجنسی قبالت کیئر سینٹر،بیسک امرجنسی قبالت کیئر سینٹر ماہر)کے ذریعے علاج کیا جائے گا۔اگر ضروری ہو،اس طرح کے معاملات میں اعلی سطح کی سہولت کے لئے ریفرل پرچی کے ساتھ بھیجا جائے گا اور اس پرچی میں ممکنہ تشخیص اور علاج دیا اور لکھا جائے گا۔
  7. حالتِ حمل کے دوم یا سوم ماہ کے دوران تمام حاملہ خواتین کے لئے ایک الٹراساؤنڈ سفارش کی گئی ہے۔اگر ضروری ہو، یو ایس جی خدمات پی پی پی موڈ میں دستیاب کرائی جائے گی اور اخراجات کو جے ایس ایس کے (جنني شیشو سُرکشا کاریہ کرم) کے تحت بُک کیا جائے گا۔
  8. ہر حاملہ خواتین کو ان کی سہولیات کو چھوڑنے کے سابق غذائیت، آرام، محفوظ جنسی تعلقات، حفاظت، جنم کی تیاریاں، خطرے کی پہچان، ادارتی وضع حمل اورخاندانی منصوبہ بندی  (پی پی ایف پی) وغیرہ موضوعات میں معلومات ذاتی یا گروپ میں دی جائے گی۔
  9. ان کلینکوں پر ایم سی پی کارڈ لازمی طور پر بھرے جانے چاہئے اور ایک اسٹیکر جو حاملہ خواتین کی حالت اور عوامل خطرہ کا اشارہ ہے ہر ویزِٹ کے لئے اسے ایم سی پی کارڈ پر جوڑاجائے گا۔
  • گرین اسٹیکر۔ اُن حاملہ خواتین کے لئے جِن کو کِسی قسم کا خطرہ نہیں ہے
  • لال اسٹیکر۔خواتین کے لئے جو تشویش ناک حالت حمل کے ساتھ ہیں
  • بلو ۔ اُن خواتین کے لئے جِن کو حالت حمل کے ساتھ بلند فشار خون ( ہائپرٹینشن ) ہے
  • پیلا۔اُن خواتین کے لئے جِن کو حالت حمل کے ساتھ ذیابطیس ، ہائپوتھائرایڈِزم ، ایس ٹی آئی کی صورت حال ہے

ماخذ :وزرات صحت اَور خاندانی بہبود ، حکومت ہند

2.5
اپنی تجاویز ارسال کریں (اگر مذکورہ بالا مواد پر آپ کو کوئی تبصرہ/تجویز دینی ہو تو براہ کرم یہاں درج کریں))
Enter the word
Back to top