ہوم / تعلیم / حقوق اطفال / قَومی بچّوں کے حقوق  تحفظ کمیشن
شیئر
Views
  • صوبہ Open for Edit

قَومی بچّوں کے حقوق  تحفظ کمیشن

قَومی بچّوں کے حقوق  تحفظ کے کمیشن نے بچّوں کے حقوق کے تحفظ اَور اُن کے مؤثر تکمیل کے لئے اقدامات کی سفارش کی ہے۔

قَومی بچّوں کے حقوق  تحفظ کے کمیشن

قَومی بچّوں کے حقوق  تحفظ کے لئے قَومی کمیشن (این سی پی سی آر)عمومیت اَور بچّوں کے حقوق کی تقدس کے اصول پر زور دیتا ہے اَور ملک کی پالیسیوں سے متعلق تمام بچّے میں فوری ضرورت کے سُر کو پہچانتا ہے۔ کمیشن کے لئے، 0 سے 18 سال عمر گروہ کے تمام بچّوں کی حفاظت کو مماثل اہمیت کا ہے۔ کمیشن کے لئے، بچّے کو بھی مزہ مِلتا ہے ہر صحیح باہمی طور پر مضبوت اَور دُوسرے پر انحصار کے طور پر دیکھا جاتا ہے۔ اس لئے حق کی فرازی کا مدعا ہی نہیں اُٹھتا۔ اُس کو 18 سال میں اُس کے تمام حقوق کا مزہ لے رہے ایک بچّے کو وہ پیدا ہوتا ہے وقت سے اُس کے سارے حقوق کے لئے استعمال پر منحصر ہے۔ اس طرح کی پالیسیوں اقدامات تمام مراحل میں اہمیت گہن کمیشن کے لئے، بچّوں کے تمام حقوق برابر اہمیت کے ہیں۔

مینڈیٹ

طفل مزدوری انسداد کے لئے کمیشن کی حکمت عملی اَور سفارشیں
جسمانی سزا پر ممنوع قانون کے تحت کمیشن کے درج ذیل ذمہ داری ہیں :

  1. کِسی تدبیر کے تابع بچّوں کے حقوق کے تحفظ کے لئے سُجھائے گئے اقدامات کی نگرانی اَور جانچ کرنا جو اُن کے مؤثر تکمیل کے لئے مَوجُودَہ مرکزی حکومت کو سجھاؤ دیتے ہیں۔
  2. اُن تمام عامِل کی جانچ کرنا جو دہشت گردی، فرقہ وارانہ تشدد، فسادات، قدرتی آفت، گھریلو تشدد، ایچ آئی وی / ایڈس، اسمگلنگ، بد سلوکی، مصبیت اَور استحصال، جسم فروشی اَور فحش ادب سے متاثر بچّوں کی خوشی کے حق اَور موقع کو کم کرتی ہے اَور اُس کے لِئے اِنسدادی اقدامات کا سجھاؤ دینا۔
  3. ایسے شورش زدہ، غَیر مُتبَرّک اَور حاشئے پر کھَڑے بچّے جو بغیر پریوار کے رہتے ہوں اَور قیدیوں کے بچّوں سے متعلق معاملات پر خیال کرنا اَور اُس کے لِئے اِنسدادی اقدامات کی تجویز دینا۔
  4. سماج کے مختلف طبقات کے درمیان بچوں کے حقوق خواندگی کا پھیلاؤ کرنا اَور بچّوں کے لئے میسّر حفاظتی اقدام کے بارے میں بیداری پھَیلانا۔
  5. مرکزی حکومت یا کِسی ریاستی حکومت یا کِسی دیگر حکام سَمیت کسی بھی ادارے کے ذریعے چلائے جا رہے سماجی ادارہ جہاں بچّوں کو حراست میں یا علاج کے مقصد سے یا اصلاح اَور تحفظ کے لئے رکھا گیا ہو، وَیسے بچّے تطبیق خانہ یا کِسی دیگر مقام پر جہاں بچّوں کا رہائش گاہ ہو یا اُس سے منسلک ادارہ کا جائزہ کرنا۔
  6. بچّوں کے حقوق کی خلاف ورزی کی جانچ‌کر ایسے معاملات میں کاروائی ابتدا کرنا اَور مندرجہ ذیل معاملات میں خود بخود علم لینا، جہاں:
  • بچّوں کے حقوق کی خلاف ورزی اَور نظر انداز ہوتا ہو
  • بچّوں کی ترقی اَور تحفظ کے لئے بنائے گئے قانون کی عمل آوری نہیں کی گئی ہو بچّوں کی فلاح و بہبود اَور اُس کو راحت فراہم کرنے کے لئے دی گئی پالیسی فیصلوں، ہدایات یا ہدایت کی تعمیل نہیں کی جاتی ہو
  • جہاں ایسے معاملے مُکَمَّل اِختیار کے ساتھ اُٹھائے گئے ہوں
  • بچّوں کےحقوق کو مؤثر بنانے کے لئے عالمی معاہدے اَور دیگر عالمی آلات کے متواتر جائزہ اَور موجودہ پالیسیوں، پروگراموں اَور دیگر سرگرمیوں کا مطالعہ کر بچّوں کے حق میں اُس کو مؤثر طور پر نافذ کرنے کے لئے سفارش کرنا
  • بچّوں کے حقوق پر بنے خصوصی اجتماع کی تقلید کا جائزہ کرنے کے لئے بچّوں کے حقوق سے جُڑے موجودہ قانون، پالیسی اَور رواج یا برتاؤ کا تجزیہ اَور جائزہ کرنا اَور پالیسی کے کسی بھی پہلو پر جانچ‌کر رپورٹ دینا جو بچّوں کو متاثر کر رہا ہو اَور اُس کے حل کے لئے نَئے اصول بنانے کی تجویز دینا
  • سرکاری محکموں اَور اداروں  میں کام کے دوران اَور خشکی پر بچّوں کے خیالات کے عزّت کو بڑھاوا دینا اَور اُس کو سنجیدگی سے لینا
  • بچّوں کے حقوق کے بارے میں معلومات پتہ  کرنا اَور اُس کا  پھیلاؤ کرنا
  • بچّوں سے جُڑے نمبر کا تجزیہ اَور مرتب کرنا
  • بچّوں کے اسکُولی نصاب، استاد تربیتی نصاب اَور بچّوں کی دیکھ بھال کرنے والے تربیتی مزدوروں کے تربیت دستی میں بچّوں کے حقوق کو بڑھاوا دینا اَور اُس کو شامل کرنا

ساخت

مرکزی حکومت کے ذریعے کمیشن میں مندرجہ ذیل ممبروں کو تین سال کی مدت کے لئے مقرر کیا جائے‌گا :

  • صدر، جِس نے بچّوں کی فلاح و بہبود  کو بڑھاوا دینے کے میدان میں بہترین کام کیا ہو
  • چھے دیگر ممبر جِن کو تعلیم، بچّوں کی صحت، دیکھ بھال، فلاح و بہبود، ترقی، اطفال انصاف، حاشیے پر پڑے نظر انداز، معذور اَور متروک بچّوں کی دیکھ بھال یا طفل مزدوری بیخ کنی، طفل نفسیات اَور قانون کے میدان میں مہارت حاصل ہو
  • ممبر معتمد، جو جوائنٹ سکریٹری سطح کے ہم منصب ہوگا یا اُس کے نیچے سطح کا نہیں ہوگا

طاقتیں

کمیشن کو مندرجہ ذیل معاملات میں سِوِل عدالت کی تمام طاقتیں حاصل ہوں‌گی-

  1. ملک کے کسی بھی حصے کے کسی بھی شخص کو سنوائی کے لئے کمیشن کے سامنے پیش ہونے کے لئے حکم دینا، اُس کو لاگو کروانا اَور حلف کا جائزہ کرنا
  2. کسی بھی دستاویز کی کھوج اَور پیش کرنے کے لئے حکم دینا
  3. حلف نامہ پر ثبوت حاصل کرنا
  4. کسی بھی عدالت کے دفتر سے عوامی رِکارڈ یا اُس کی کاپی حاصل کرنا
  5. دستاویز کے گواہ کی جانچ کے لئے کمیشن کی تشکیل کرنا

شکایتی نظام

کمیشن کا ایک اہم مینڈیٹ بچّوں کے حقوق کی خلاف ورزی سے  متعلق شکایت کی جانچ کرنی ہے۔ کمیشن کے لئے یہ بھی ضروری ہے کہ وہ بچّوں کے حقوق کے سنگین خلاف ورزی  کی صورت حال میں وہ خود بخود علم لےکر معاملے کی جانچ کریں کہ کون سے عناصر بچّوں کو اُن کے حقوق کا مزہ اُٹھانے سے روک رہی ہے۔

  1. کمیشن کے سامنے وہ شکایت آئین کی 8 ویں فہرست میں بیان شدہ کسی بھی زبان میں کی جا سکتی ہے
  2. اس طرح کی شکایت درج کرانے کے لئے کوئی فیس نہیں لیا جائے‌گا
  3. شکایت میں معاملے کا مُکَمَّل تفصیل شامل ہوگا
  4. اَگر کمیشن ضروری سمجھے تو دیگر معلومات / حلف نامہ داخل کرنے کے لئے کہہ سکتی ہے

شکایت کرتے وقت یہ مقررہ کر لیں کہ اُس میں مندرجہ ذیل چیزیں واضح ہوں :

  1. شکایت واضح اَور خَوانا ہو اَور کِسی تخلص نام سے داخل نہیں کیا گیا ہو
  2. ویسے شکایت کے لئے کوئی فیس نہیں لیا گیا ہو
  3. جو مدعا اُٹھایا ہو وہ جائیداد کے حق اَور معاہدہ کی ذمہ داری جیسے سِوِل تنازعے سے جُڑا ہوا نہیں ہو
  4. اُٹھایا گیا مدعا خدمت مدعوں سے متعلق نہیں ہوں
  5. وہ معاملہ آئین کے تحت تشکیل شدہ کِسی کمیشن یا اُس کے تابع کام کرنے والے کِسی اتھارٹی کے سامنے زیر التوا نہیں ہو
  6. معاملے کا کِسی کمیشن کے ذریعے پہلے ہی کارکردگی نہیں کر دیا گیا ہو
  7. کِسی دیگر بنیاد پر کمیشن کے دائرہ اختیار سے باہر نہیں ہو

ماخذ قَومی بچّوں کی تحفظ کے کمیشن (http://www.ncpcr.gov.in/index۔php?lang=2)۔

2.6
اپنی تجاویز ارسال کریں (اگر مذکورہ بالا مواد پر آپ کو کوئی تبصرہ/تجویز دینی ہو تو براہ کرم یہاں درج کریں))
Enter the word
Back to top