ہوم / ای ۔ گورننس / ڈیجیٹل انڈیا / ڈیجیٹل اِنڈیا کی قیاس آرائی
شیئر
Views
  • صوبہ Open for Edit

ڈیجیٹل اِنڈیا کی قیاس آرائی

ڈیجیٹل اِنڈیا کی قیاس آرائی کو بتایا گیا ہے۔

کردار

عوام کو بااختیار بنانے کے لئے معلوماتی ٹیکنالوجی کو شروع کرنے کے مقصد سے بہت سی پہل کی گئی ہیں۔کچھ پہل کے سبب صحت،تعلیم،محنت اَور روزگار اَور کاروبار وغیرہ سے متعلق میدانوں میں مختلف خدمات کی توسیع ہوئی ہے۔

ڈیجیٹل اِنڈیا کا ہندوستان کو ڈیجیٹل طور پر بااختیار معاشرہ اَور علمی معیشت میں تبدیل کرنے کے لئے ایک پر عزم پروگرام کے طور پر قیاس آرائی کی گئی ہے۔علمی معیشت بنانے کے لئے اَور تمام حکومت کی ہم عصر اَور مربوط شراکت داری کے ذریعے ہرایک عوام کے لئے بہترین حکومت لانے کے مقصد سے اِس واحد پروگرام کے تابع مختلف پَہلوں کو شامل کیا گیا ہے۔

پروگرام کی قیاس آرائی اَور عمل آوری

یہ پروگرام الیکٹرانکس اَور محکمہ معلومات ٹیکنالوجی کے  ذریعے مختلف مرکزی وزرات / محکموں  اَور ریاستی حکومتوں کی مدد سے تیار اَور مربوط کیا گیا ہے۔وزیر اعظم ڈیجیٹل اِنڈیا کی نگرانی کمیٹی کے صدر ہیں۔تمام موجودہ اَور آنے والی اِی۔حکومت پَہلوں کو ڈیجیٹل اِنڈیا کے اصولوں کے مُطابق ترمیم شدہ اَور  دوبارہ تیار کیا گیا۔ڈیجیٹل اِنڈیا پروگرام کے ویژن کا مقصد الیکٹرانکس سروسز،مصنوعات،مینوفیکچرنگ اَور روزگار کے مواقع وغیرہ کے علاقوں کا مجموعی ترقی کرنے کا بھی ہے۔

ڈیجیٹل اِنڈیا کا ویژن

ڈیجیٹل اِنڈیا کا ویژن تین اہم علاقوں پر مرکوز ہے-

  1. ڈیجیٹل بنیادی ڈھانچہ ہرایک شہری کی افادیت کے طور پر۔
  2. مانگ پر حکومت اَور خدمات۔
  3. شہریوں کا ڈیجیٹل عطاۓ اختیار۔

ڈیجیٹل اِنڈیا پروگرام کا مقصد

مذکورہ بالا ویژن کے ساتھ ڈیجیٹل اِنڈیا پروگرام کا مقصد براڈبینڈ ہائی وے،موبائل جُڑاو کے لئے عالمی پہُنچ،عوامی انٹرنیٹ پہُنچ پروگرام،

اِی۔حکومت : ٹیکنالوجی کے ذریعے  سے حکومت میں اصلاح،اِی۔انقلاب خدمات کی الیکٹرانک تکمیل کی معلومات،

الیکٹرانکس صنعتکاری : ہدف صفر در آمد،روزگار کے لئے معلوماتی ٹکنالوجی اَور جلد ہارویسٹ پروگرام میسّر کرانے کا ہے۔کئی منصوبہ بندی / مصنوعات یا تو پہلے ہی لانچ کئے جا چُکے ہے یا لانچ کئے جانے کے لئے تیار ہے۔جَیسا کہ نیچے دِکھایا گیا ہے-

  • ڈیجیٹل لاکر نظام کا مقصد خارجی دستاویزات کے استعمال کو کمتر کرنا اَور مختلف ایجنسیوں میں اِی۔دستاویز کی حصےداری میں لائق بنانا ہے۔اِی۔دستاویز کی حصےداری  ر جسٹرڈ  جمع کاروں کے ذریعے سےکی جائے‌گی،جِس سے آن لائن دستاویزات کی صداقت متعین ہوگی۔
  • مائی گَو  ڈاٹ اِن " ڈِسکس " " ڈو " اَور " ڈِسِمِنیٹ " پہُنچ‌ کے ذریعے حکومت میں لگے ہرایک شہری کے لئے ایک پلیٹ فارم کے طور پر لاگو کی گئی ہے۔مائی گَو کے لئے موبائل ایپ ایک موبائل فون پر صارفین کے لئے یہ خصوصیات  میسّر کرائی جائیں‌گی۔
  • سوَچھ بھارت مِشن(ایس بی ایم)موبائل ایپ کا استعمال سوَچھ بھارت مِشن کے مقاصد کو حاصل کرنے کے لئے عوام اَور سرکاری تنظیمات کے ذریعے کیا جا سکے‌گا۔
  • اِی۔دستخط ڈھانچے سے شہری بنیادی صداقت استعمال کرتے ہوئے آن لائن دستاویزات پر ڈیجیٹل طور پر دستخط کر سکیں‌گے۔
  • اِی۔ہسپتال ایپلیکیشن کے ماتحت آن لائن رجسٹریشن سسٹم(او آر ایس)شروع کیا گیا ہے۔یہ ایپلیکیشن آن لائن نامزدگی،فیس اور مِلنے کے یقینی وقت کی ادائیگی،آن لائن تشخیص رپورٹ،آن لائن خون کی دستیابی کی معلومات جیسی اہم خدمات میسّر کرائے‌گی۔
  • نیشنل اسکالرشِپ پورٹل سے طلباء کے درخواست نامہ جمع کرنے،توثیق،منظوری اَور تمام مستفیدین کوحکومت ہند کے ذریعے میسّر کرائے جا رہے وظائف کی تقسیم تَک کے عمل کا ایک مشت حل ہو سکے‌گا۔
  • محکمہ الیکٹرانکس اَور معلومات ٹیکنالوجی  نے ملک میں وسیع سطح پر رکارڈ کو ڈیجیٹائز کرنے کے لئے ڈیجیٹائز اِنڈیا پلیٹ فارم(ڈی آئی پی)نامی ایک پہل شروع کی گئی ہے،جو شہریوں کو موثر خدمات فراہم کرے‌گی۔
  • حکومت ہند نے ہندوستان  نیٹ نامی ایک پہل شروع کی ہے،جو ملک کی ڈھائی لاکھ گرام پنچائت کو جوڑنے کے لئے اعلیٰ رفتار کا ڈیجیٹل ہائی وے ہے۔
  • بی ایس این ایل نے 30 سال پُرانے ایکسچینجوں کو ہٹانے کے لئے نیکسٹ جنریشن نیٹورک(این جی این)شروع کیا ہے،جو وائس،ڈاٹا،ملٹی میڈیا / ویڈیو اَور دیگر تمام قسم کی پیکیٹ سوِیچ مواصلاتی خدمات کو قابو کرنے کے لئے آئی پی پر منحصر ٹکنالوجی ہے۔
  • بی ایس این ایل نے پُورے ملک میں وائی فائی،ہاٹ اسپوٹس کی تعیناتی کی ہے۔اِس سے صارفین اپنے موبائل ڈیوائس کے ذریعے بی ایس این ایل وائی فائی نیٹ ورک کا استعمال کر سکتا ہے۔
  • شہری خدمات الیکٹرانک طور پر دستیاب کرانے اَور شہریوں اَور احکام کی ایک دوسرے کے ساتھ بات چیت میں اصلاح لانے کے لئے یہ مُلک گیر جُڑاؤ  بہت ضروری ہے۔حکومت نے اِس ضرورت کو محسوس کیا ہے اَور یہ ڈیجیٹل اِنڈیا میں براڈبینڈ ہائی وے کو ڈیجیٹل اِنڈیا کے ایک اہم ستون کے طور پر شامل کرکے دِکھایا گیا ہے۔ملک کے شہریوں کو خدمات کی تکمیل میں مدد کرنے کے لئے ٹکنالوجی کو میسّر کرانے اَور لائق بنانے کے لئے جُڑاؤ ایک معیاری سطح ہے۔
  • محکمہ الیکٹرانکس اَور معلومات ٹکنالوجی نے اِی۔حکومت میں اِی۔انقلاب ڈھانچہ،حکومت ہند  کے لئے اوپن سورس سافٹ ویئر اپنانے پر پالسی،اِی۔حکومت نظام میں اوپن سورس سافٹ ویئر اپنانے کے لئے ڈھانچہ،حکومت ہند  کے لئے اوپن ایپلیکیشن پروگرامِنگ انٹر فیسیز(اے پی آئی)کے لئے پالسی،حکومت ہند کی اِی۔میل پالسی،حکومت ہند کی معلومات ٹکنالوجی وسائل کے استعمال پر پالسی،سرکاری ایپلیکیشن کے ذریعہ وسیلہ کوڈ کو کھولنے کے لئے شراکتی ایپلیکیشن ترقی پر پالسی،کلاؤڈ ریڈی ایپلیکیشن کے لئے ایپلیکیشن ترقی اَور ری۔انجینیرنگ ہدایات جیسی پالسی پہل شروع کی ہیں۔
  • مختلف شمال مشرقی ریاستوں اَور دیگر ریاستوں کے چھوٹے اَور مفصل شہروں میں بی پی او مرکز کھولنے کے لئے بی پی او پالسی کو منظوری دی گئی ہے۔
  • الیکٹرانکس ترقی فنڈ(اِی ڈی ایف)پالسی کا مقصد اختراع،تحقیق اَور ترقی،مصنوعات اَور ترقی کی حوصلہ افزائی کرنے تمہیدی فنڈز کے خود کفیل ماحولیاتی نظام کی تخلیق کرنے کے لئے ملک میں آئی پی کا وسائل پُول  قائم کرنا ہے۔
  • فلیکزیبل الیکٹرانکس کے اُبھرتے ہوئے میدان میں تحقیق اَور اختراع کی حوصلہ افضائی کرنے کے لئے فلیکزیبل الیکٹرانکس کے لئے قَومی مرکز ایک پہل ہے۔
  • انٹرنیٹ آن تھِنکس(آئی اوٹی)کے لئے افضلیت مرکز  محکمہ الیکٹرانکس اَور معلومات ٹیکنالوجی،اِی آر این آئی ٹی  اَور نیسّوکیم کی مشترکہ پہل ہے۔

2019 تَک ڈیجیٹل اِنڈیا کے تخمینہ شدہ اثر سے تمام پنچائتوں میں براڈبینڈ کنیکٹیوِٹی سے لےکر اسکولوں اَور درسگاہوں میں وائی۔فائی اَور عوامی طور پر وائی۔فائی ہاٹ اسپاٹس میسّر ہو جائیں‌گے۔براہ راست اَور بالواسطہ طور پر اِس پروگرام سے بھاری تعداد میں معلومات ٹیکنالوجی،ٹیلی کام اَور الیکٹرانکس روزگار پیدا ہوں‌گے۔اِس پروگرام کی کامیابی سے ہندوستان ڈیجیٹل طور پر بااختیار بنے‌گا اَور صحت،تعلیم،زرعی،بینکِنگ جیسے میدانوں سے متعلق خدمات کی تکمیل میں معلومات ٹکنالوجی کے استعمال میں اوّل مقام پر ہوگا۔

اِس پروگرام کی اہمیت

  • ڈیجیٹل اِنڈیا ملک بھر میں الیکٹرانک گورنینس اَور یونیورسل فون کنیکٹیوٹی فراہم کرنے کے لئے ایک بڑے پیمانے پر تکنیکی توسیع دینے کا کام کرے‌گا۔اِس کا ایک مقصد ایسی ٹیکنالوجی کی تعمیر کرنی ہوگی،جو ملک کے ڈیجیٹل ڈِوائڈ کی کھائی کو پاٹ سکے۔
  • اِسے ہندوستان کے مستقبل کی تبدیلی کے طور پر پیش کیا ہے۔وزیر اعظم کا ماننا ہے کہ پہلے جِس طرح بچّا پڑھائی کی نقل کرنے کے لئے گھر کے کِسی شخص کا چشمہ لگاکر بیٹھ جاتا تھا اب اُسی طریقے سے وہ موبائل کا استعمال کرے‌گا۔
  • اب اِی۔گورنینس کو ایم گورنینس میں بدلنا ہے۔ایم گورنےنس کا مطلب مودی سرکار نہیں ہے بلکہ موبائل سرکار ہے۔اُنہوں نے اِس بات کو سمجھانے کی پُوری کوشش کی کہ کس طرح یہ ہمارے لئے ضروری ہے۔
  • اِس کا مقصد 2020 تَک ہندوستان کو ٹیکنالوجی کے میدان میں خود کفیل بنانے کا ہے۔اس کے ساتھ ہی وہ 100 مِلِین روزگار بھی پَیدا  کئے جائیں‌گے۔
  • بڑھتی ہوئی معیشت اَور موبائل کی گِرتی ہوئی قیمتوں نے ہندوستان کو اسمارٹ فون کی دنیا میں ایک بہت بَڑا بازار بنا دیا ہے۔اب تکنیک کے ذریعے سے اِس بازار کا استعمال تعلیم اَور صحتی میدان کے لئے بھی کیا جانا ہے۔
    • براڈبینڈ ہائی وے : ڈیجیٹل اِنڈیا کا اہم ستون

      براڈبینڈ ہائی وے ایک غیر حقیقی ڈیجیٹل سڑک ہے،جِس پر ہر قسم کی سہولیات اِی۔گورنینس کے ذریعے مِلیں‌گی۔شہری خدمات الیکٹرانک طور پر دستیاب کرائی جائیں‌گی اَور شہریوں اَور احکام کی ایک دوسرے کے ساتھ بات چیت کرانے کے لئے ذریعہ بنائے جائیں‌گے۔ڈیجیٹل اِنڈیا میں براڈبینڈ ہائی وے کو ڈیجیٹل اِنڈیا کا ایک اہم ستون کے طور پر مانا جا رہا ہے۔ملک کے شہریوں کو خدمات کی فراہمی میں مدد کرنے کے لئے ٹیکنالوجی کو دستیاب کرانے اَور لائق بنانے کے لئے جُڑاؤ ایک معیاری سطح یہ ہے ۔

      ملک کو جوڑے‌گا براڈبینڈ ہائی وے

      مختلف شمال مشرقی ریاستوں اَور دیگر ریاستوں کے چھوٹے اَور مفصل شہروں میں بی پی او مرکز کھولنے کے لئے بی پی او قائم کئے جائیں‌گے۔الیکٹرانکس ترقی فنڈ(اِی ڈی ایف)پالسی کا مقصد اختراع،تحقیق اَور ترقی،مصنوعات اَور ترقی کی حوصلہ افزائی کرنے تمہیدی فنڈز کے خود کفیل ماحولیاتی نظام کی تخلیق کرنے کے لئے ملک میں آئی پی کا وسائل پول قائم کیا جائے‌گا۔فلیکزیبل الیکٹرانکس کے اُبھرتے ہوئے میدان میں تحقیق اَور اختراع کی  حوصلہ افضائی کرنے کے لئے فلیکزیبل الیکٹرانکس کے لئے قَومی مرکز بنایا جائے‌گا۔اِس کے تحت انٹرنیٹ آن تھِنکس(آئی اوٹی)کے لئے افضلیت مرکزی الیکٹرانکس اَور معلومات ٹیکنالوجی محکمہ،ای آر این ای ٹی اَور نیسّوکیم کی مشترکہ پہل ہے۔

      2019 تَک ڈیجیٹل اِنڈیا کے تخمینہ شدہ اثر سے تمام پنچائت کو براڈبینڈ کنیکٹیوٹی سے جوڑا جائے‌گا۔کنیا کُماری سے لےکر شرینگر تَک تمام اسکولوں اَور درسگاہوں میں وائی۔فائی اَور عوامی طور پر وائی۔فائی ہاٹ اسپاٹس میسّر ہو جائیں‌گے۔واضح اَور بِلاواسطہ طور پر  اِس پروگرام سے بھاری تعداد میں معلومات ٹیکنالوجی،ٹیلی کام اَور الیکٹرانکس روزگار پیدا ہوں‌گے۔ اِس براڈبینڈ ہائی وے کے ذریعے  سے پُورا ہندوستان ڈیجیٹل طور پر بااختیار بنے‌گا۔ یہ وہ ہائی وے ہے جو صحت،تعلیم،زرعی،بینکِنگ جیسے میدانوں سے متعلق خدمات کی تکمیل میں معلومات ٹیکنالوجی کے استعمال میں اوّل مقام پر لے جائے‌گا۔

      ماخذ : خطوطی معلومات دفتر،حکومت ہند  اَور روزانہ اخبار۔

2.8
اپنی تجاویز ارسال کریں (اگر مذکورہ بالا مواد پر آپ کو کوئی تبصرہ/تجویز دینی ہو تو براہ کرم یہاں درج کریں))
Enter the word
Back to top